مال خانے میں آتشزدگی ،خطرناک دہشت گردوں کی رہائی کا امکان

مال خانے میں آتشزدگی ،خطرناک دہشت گردوں کی رہائی کا امکان

کراچی (کرائم رپورٹر)قانونی ماہرین نے سٹی کورٹ مال خانے میں لگنے والی آگ کو تخریب کاری قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ کیس پراپرٹی کے بغیر مقدمات کمزور ہو جائیں گے، شکر ہے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔ واقعہ کی شفاف تحقیقات عمل میں لائی جائیں۔ ذرائع کے مطابق سٹی کورٹ کے مال خانے میں 2500 سنگین مقدمات کے اہم ثبوت جلا دیے گئے، آگ لگنے سے کیس پراپرٹی خاکستر ہوگئی۔ تفتیشی افسران شواہد عدالتوں میں پیش نہیں کر سکیں گے جس کے باعث متحدہ اور گینگ وار دہشت گردوں کو فائدہ ہوگا اور ان کو سزائیں نہیں دی جاسکیں گی، اس طرح تمام گرفتار خطرناک دہشت گردوں اور جرائم پیشہ عناصر کی رہائی کا امکان ہے۔ مال خانے میں آتشزدگی سے شہر کا امن دا پر لگ گیا ہے۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ مال خانے میں ملزمان کے قبضے سے برآمد ہونے والے بم، بارودی مواد، ہتھیار، گولیاں، منشیات، سونا چاندی، نقدی، خون آلود کپڑے، آلہ قتل اور فائلیں موجود تھیں۔ ڈی آئی جی ساتھ کا کہنا ہے کہ واقعہ میں 2 اضلاع کا ریکارڈ مکمل جل گیا ہے۔ آگ لگنے کے بعد علاقہ دھماکوں سے گونجتا رہا اور عمارت کا ایک حصہ منہدم ہوگیا۔ آگ پر 4 گھنٹے میں قابو پایا گیا، جبکہ فوج کے بم ڈسپوزل اسکواڈ نے بھی مال خانے کا دورہ کیا۔ تحقیقاتی ٹیمیں تشکیل دے دی گئیں۔ ذرائع نے دعوی کیا کہ قانون نافذ کرنے والے اداروں نے کراچی میں امن وامان کے قیام کے لیے انتھک محنت سے جن دہشت گردوں کو گرفتار کیا تھا عدالتوں میں ان کے مقدمات چل رہے تھے اور مال خانے میں آگ لگا کر ایسے سنگین مقدمات کے ثبوت مٹادیے گئے ہیں۔ ثبوت نہ ہونے سے کالعدم تنظیموں کے دہشت گردوں سمیت ایم کیو ایم اور لیاری گینگ وار سے تعلق رکھنے والے خطرناک دہشت گردوں کی رہائی ممکن ہو جائے گی اور یہ دہشت گرد آزاد ہو کر پھر سے شہر کا امن تباہ کر سکتے ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ مال خانے میں 500 سے زائد قتل کے مقدمات کے جائے وقوع سے ملنے والے خون آلود کپڑے اور آلہ قتل بھی جل گئے ہیں جس کے باعث قتل کے مقدمات کی سماعت میں مشکلات پیش آسکتی ہیں۔ چاروں اضلاع کی عدالتوں میں کراچی آپریشن کے دوران پکڑے جانے والے متحدہ، لیاری گینگ وار، اے این پی، کالعدم قوم پرست جماعتوں، کالعدم تحریک طالبان، القاعدہ سمیت دیگر گروپوں کے دہشت گردوں کو سخت سیکورٹی میں لایا جاتا ہے، کیس پراپرٹی جلنے سے خطرناک ملزمان کو فائدہ پہنچنے کا قوی امکان ہے۔ پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ متحدہ قومی موومنٹ، لیاری گینگ وار اور کالعدم تنظیموں کے دہشت گردوں کی جانب سے ملنے والا اسلحہ بھی مال خانے میں موجود تھا جو آگ لگنے کی وجہ سے جل کر خاکستر ہوگیا۔ گرفتار دہشت گردوں سے برآمد ہونے والا اسلحہ اور دھماکہ خیز مواد تفتیشی افسران کورٹ میں پیش نہیں کرسکیں گے جس کی وجہ سے دہشت گردوں کو سنگین کیسوں میں فائدہ پہنچے گا۔

مزید : کراچی صفحہ اول