”میں تو اسے ’غیر قانونی‘ کہوں گا کہ آپ نے جہانگیر ترین کو۔۔۔“ تاحیات نااہلی کے فیصلے کے بعد عارف نظامی نے ایسی بات کہہ دی جو کوئی سوچ بھی نہ سکتا تھا، سوشل میڈیا پر ہنگامہ برپا ہو گیا

”میں تو اسے ’غیر قانونی‘ کہوں گا کہ آپ نے جہانگیر ترین کو۔۔۔“ تاحیات ...
”میں تو اسے ’غیر قانونی‘ کہوں گا کہ آپ نے جہانگیر ترین کو۔۔۔“ تاحیات نااہلی کے فیصلے کے بعد عارف نظامی نے ایسی بات کہہ دی جو کوئی سوچ بھی نہ سکتا تھا، سوشل میڈیا پر ہنگامہ برپا ہو گیا

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) معروف سینئر صحافی عارف نظامی نے کہا ہے کہ وہ اسے ’غیر قانونی‘ کہیں گے کہ آپ ہر ایک شخص کو ایک ہی لاٹھی سے ہانک رہے ہیں جس کی مثال آج کا فیصلہ ہے کہ جہانگیر ترین کو بھی تاحیات نااہل قرار دیدیا جس کی آمدن شائد جائز تھی اور اس پر کسی نے انگلی نہیں اٹھائی تھی۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔”نواز شریف کی تاحیات نااہلی ختم ہو سکتی ہے اگر۔۔۔“ عدالت نے تہلکہ خیز فیصلہ سنانے کے بعد نواز شریف کیلئے ’خوشخبری‘ بھی بتا دی، وہ کس طرح دوبارہ الیکشن لڑ سکتے ہیں؟ تفصیلات سامنے آ گئیں 

نجی ٹی وی کے پروگرام میں عارف نظامی سے سوال کیا گیا کہ ”سپریم کورٹ کے آج کے فیصلے سے سیاسی اثرات کیا ہوں گے؟ لوگوں کی مسلم لیگ (ن) سے ہمدردی بڑھ جائے گی یا پھر یہ واضح ہو گیا ہے کہ مسلم لیگ (ن) کی سیاست ختم ہو گئی ہے؟“

عارف نظامی نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ ”مسلم لیگ (ن) کی سیاست کو تو ختم نہیں کہا جا سکتا لیکن نواز شریف کی سیاست پہلے ہی ختم ہو چکی ہے اور وہ نیب کے مقدمات بھگت رہے ہیں۔ نواز شریف کی نااہلی کا فیصلہ تو پہلے ہی آ گیا تھا اور اب اس پر مزید مہر تصدیق ثبت ہوئی ہے اور چوتھی دفعہ انہیں نااہل قرار دیا گیا ہے۔

میرا نہیں خیال کہ اس سے فوری طور پر کوئی سیاسی اثر پڑے گا لیکن اس کا اثر پہلے ہی پڑ رہا ہے کہ نواز شریف اپنی جماعت میں کسی قسم کے عہدیدار بھی نہیں ہیں اور خود کو پیٹرن انچیف یعنی قائد کہتے ہیں۔ میں تو اسے ’غیر قانونی‘ سمجھتا ہوں کہ آپ ہر شخص کو ایک ہی لاٹھی سے ہانک دیں اور اس کی مثال آج والا فیصلہ ہے کہ آپ نے جہانگیر ترین کو جن کی آمدن شائد جائز تھی اور اس پر کسی نے انگلی بھی نہیں اٹھائی تھی، ان کو بھی تاحیات نااہل کر دیا اور نواز شریف کو بھی، جن کے بارے میں پانامہ کا معاملہ سامنے آیا اور کہا جاتا ہے کہ انہوں نے منی لانڈرنگ بھی کی۔

یہ بھی پڑھیں۔۔۔سپریم کورٹ کی جانب سے تاحیات نااہل قراردیئے جانے کے بعد جہانگیر ترین نے انتہائی حیران کن اعلان کردیا، وہ بات کہہ دی جو کوئی سوچ بھی نہ سکتا تھا 

یقینا یہ کہا جا سکتا ہے کہ قانون اندھا ہے لیکن عدالتوں کا کام قانون کی صحیح وضاحت ہے۔ اب جہانگیر ترین نے امید ظاہر کی ہے کہ انہیں نظرثانی کی اپیل پر ریلیف ملے گا لیکن عموماً نظرثانی کی 99 فیصد اپیلوں کو یا تو مسترد کر دیا جاتا ہے یا پھر فیصلہ اور بھی سخت کر دیا جاتا ہے۔ “

مزید : قومی /ڈیلی بائیٹس /علاقائی /اسلام آباد /پنجاب /لاہور