کرونا وباء سے بچاؤ کیلئے احتیاط بہت ضروری ہے، شوبز شخصیات

کرونا وباء سے بچاؤ کیلئے احتیاط بہت ضروری ہے، شوبز شخصیات

  

لاہور(فلم رپورٹر)شوبز کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات کا کہنا ہے کہ ہم سب کو اللہ کے حضور سر کو جھکانا چاہیے اور گڑ گڑا کر مانگنا چاہئے۔ اب جبکہ کرونا وائرس کا ہر سمت خوف و ہراس پھیلا ہوا ہے تو ہم احتیاطی تدابیر کو اپنائیں، اچھا اور صحت بخش کھانا کھائیں صفائی کا خاص خیال رکھیں بار بار وضو کریں وباء نے اس وقت ساری دنیا کو اپنی لپیٹ میں لے رکھا ہے اور مختلف ممالک کے لاکھوں افراد اس سے متاثر ہوئے ہیں ہزاروں کی تعداد میں لقمہِ اجل بن چکے ہیں۔شوبز کے مختلف حلقوں سے تعلق رکھنے والی معروف شخصیات کا کہنا ہے کہبحثیت مسلمان ہمارا یہ عقیدہ اور ایمان ہے کہ سب کچھ اللہ کہ قبضہ قدرت میں ہے، اور سب اللہ ہی کی طرف سے ہے چاہے وہ کوئی پریشانی ہو یا خوشی، مصیبت ہو یا راحت و سکون، لہذا جیسے بھی حالات ہو ہمیں اپنے اللہ سے لو لگانی چاہیے۔شاہد حمید،شان،معمر رانا،مسعود بٹ،پرویز کلیم،میگھا،ماہ نور،شاہدہ منی،لائبہ علی،سہراب افگن،سٹار میکر جرار رضوی،یار محمد شمسی صابری،گلفام،ہانی بلوچ،اچھی خان،ذویا قاضی،مایا سونو خان،ڈیشی راج،آغا قیصر عباس،سدرہ نور،ندا چوہدری،آفرین خان،آفرین پری،آشا چوہدری،عامر راجہ،بی جی،حمیرا،عینی رباب،عروج،روبی انعم،اظہر بٹ،سفیان احمد،انوسنٹ اشفاق،محرمہ علی،عباس باجوہ،آغا حیدر،شین فریال،نادیہ علی،لکی ڈیئر،طاہر نوشاد،مختار چن،اسد مکھڑا،شجر عباس،نواز انجم،احمد نواز،محسن گیلانی،دلاور ملک،اکرم اداس،عباس اشرف،افشین اشرف،بینا چوہدری اور دیگر کا کہنا ہے کہہم دو کاموں پے خصوصی توجہ دیں جو انتہائی اہم اور ضروری ہیں، پہلا کام تو یہ کہ ہم کثرت سے استغفار کریں کیونکہ قرآن و حدیث میں اس کی بہت تاکید کی گئی ہے۔

استغفار کرنے سے انسان کے تمام چھوٹے بڑے گناہ معاف کر دیئے جاتے ہیں اور یہ دل کی سلامتی و صفائی کا ذریعہ ہے اور غموں اور پریشانیوں کا علاج بھی، استغفار کے ان گنت فوائد ہیں لہذا اپنے گناہوں کا اعتراف کر کے رب کے حضور رو رو کر معافی مانگیں، اپنے گناہوں پر شرمسار ہو کر ندامت کے آنسو بہائیں سچی اور پکی توبہ کریں۔ممکن ہے کہ اللہ ہم سے اپنا عذاب اٹھا لے کیونکہ اللہ تعالیٰ کسی بھی قوم کو اْس وقت تک ہلاک نہیں کرتے جب تک ان میں استغفار کرنے والے اور اللہ سے ڈرنے والے موجود ہو لہذا زیادہ سے زیادہ اللہ کی بارگاہ میں دعائیں مانگیں، اور ''استغفر اللہ'' کا اجتماعی اور انفرادی طور پر ورد کریں، اور آئندہ کے لئے گناہ نہ کرنے کا عزم کریں اور رب کے حضور سچی اور پکی توبہ کریں کیونکہ اللہ توبہ قبول کرنے والا ہے اور توبہ کرنے والوں کو پسند بھی فرماتا ہے۔

مزید :

کلچر -