مسیحا خود مریض بن گئے!

مسیحا خود مریض بن گئے!

  

ملتان سے ایک اور افسوسناک خبر ملی ہے جس کے مطابق کورونا سے متاثر مریضوں کی دیکھ بھال اور علاج کرنے والے طبی عملے کے 89 افراد خود اس وائرس سے متاثر ہو گئے اور ان کو نشتر ہسپتال کے قرنطینہ وارڈ میں منتقل کرکے ان کا علاج شروع کر دیا گیا ہے، ان میں چالیس ڈاکٹروں اور نرسوں کے علاوہ پیرا میڈیکل سٹاف کے ارکان ہیں۔ موقر اخبارات کے مطابق یہ لوگ دن رات خدمت کر رہے تھے اب ان حضرات نے شکایت کی ہے کہ وہ حفاظتی سامان کی کمی اور زیادہ وقت کی ڈیوٹی کی وجہ سے بیمار ہوئے ہیں اس سلسلے کا دُکھ والا پہلو بھی یہ ہی ہے کہ مسلسل شکایات کے باوجود یہ کہا گیا کہ حفاظتی سامان کی کمی نہیں اور سب کو مہیا کر دیا گیا اب یکایک اتنی بھاری تعداد میں مسیحا خود مریض بن گئے ہیں تو سوال پیدا ہوتا ہے کہ پھر مریضوں کا علاج کون کرے گا اس معاملے کا فوری نوٹس اور کارروائی ضروری ہے اور اعلان یا بیان کی بجائے حفاظتی سامان پورا کیا جائے۔

مزید :

رائے -اداریہ -