بیرون ملک پھنسے 4ہزار پاکستانیوں کو 19اپریل تک وطن واپس لانے کا اعلان

  بیرون ملک پھنسے 4ہزار پاکستانیوں کو 19اپریل تک وطن واپس لانے کا اعلان

  

راولپنڈی(مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر ایوی ایشن غلام سرور خان کا کہنا ہے کہ حکومت کورونا وائرس کے باعث دنیا بھر میں پھنسے 4 پاکستانیوں کو خصوصی پروازوں کے ذریعے وطن واپس لائے گی۔ڈان اخبار کی رپورٹ کے مطابق انہوں نے بتایا کہ پھنسے ہوئے پاکستانیوں کو وطن واپس لانے کے لیے 11 اپریل سے 19 اپریل تک خصوصی پروازیں چلائی جائیں گی جبکہ وطن واپس آنے والے 2 ہزار افراد کے بلا معاوضہ ٹیسٹ ہو چکے ہیں اور وہ 14 روز تک کے لیے قرنطینہ مراکز میں ہیں۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ’پنجاب، خیبرپختونخوا اور سندھ کی صوبائی حکومتوں سے کہا گیا ہے کہ وہ مکمل انتظامات کریں بلکل وہسے ہی جس طرح اسلام آباد انٹرنیشنل ایئر پورٹ پر وفاقی حکومت نے کیے ہیں‘۔غلام سرور خان نے کہا کہ خصوصی پروازوں کے انتظامات مکمل کرنے کے بعد کراچی، لاہور اور پشاور کے ہوائی اڈے کھول دیے جائیں گے۔انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومتوں نے اپنے ہوائی اڈوں کے قریب قرنطینہ مرکز قائم کرنا شروع کردیے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ حج سے متعلق فیصلہ زیر التوا ہے، متحدہ عرب امارات میں 20 ہزار پاکستانی موجود ہیں جبکہ اب بھی بہت سارے پاکستانی ایران اور سعودی عرب میں ہیں جنہیں واپس لایا جائے گا۔وزیر کا کہنا ہے کہ پنجاب، خیبر پختونخوا اور سندھ سے خصوصی پروازوں کے لیے ہوائی اڈے کھولنے، قرنطینہ مراکز قائم کرنے کو کہا گیا ہے۔ممبران صوبائی اسمبلی حاجی امجد اور واثق قیوم کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کے دوران انہوں نے کہا کہ راولپنڈی انتظامیہ ڈینگی اور کورونا وائرس پر قابو پانے کے لیے کوشاں ہے۔انہوں نے کہا کہ سرکاری سبسڈی کے عام لوگوں تک منتقلی کو یقینی بناتے ہوئے شہریوں کی مشکلات کو کم کرنے کے لیے ایک مناسب منصوبہ تیار کیا جائے گا۔ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ راولپنڈی سمیت ملک میں کہیں بھی بنیادی ضروریات کی کمی نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ ’احساس پروگرام پیر سے مکمل طور پر فعال ہو جائے گا، ہر یونین کونسل میں 2 سے 3 مقامات پر مستحق خاندانوں میں نقدی تقسیم کرنے کے لیے کاؤنٹر قائم کیے جائیں گے‘۔انہوں نے کہا کہ حکومت 14 اپریل سے تعمیراتی صنعت کھولنے جارہی ہے جس کے بعد ترقیاتی منصوبوں پر کام شروع ہوگا۔

پاکستانی واپسی

دبئی،کرائسٹ چرچ (این این آئی)کرونا وائرس کے باعث فلائٹ آپریشن معطل ہونے سے نیوزی لینڈ اور دبئی پھنسے پاکستانیوں کی وطن واپسی کے لئے اقدامات جا رہی ں اس حوالے سے دبئی میں پاکستانی قونصل خانے کا کہنا کہ متحدہ عرب امارات سے وطن واپسی کے لئے ہمیں پاکستانی شہریوں کی درخواستیں موصول ہوئی ہیں۔حکومت پاکستان سے اجازت ملنے کے بعد شہریوں کی واپسی کے لئے خصوصی پروازیں شروع کی جائیں گی،دوسری طرف نیوزی لینڈ میں تعینات پاکستانی ہائی کمشنر ڈاکٹر عبدالمالک نے کہا ہے کہ کرونا کے باعث نیوزی لینڈ میں پھنسنے والے پاکستانی شہریوں کی مشکلات سے آگاہ ہیں، پاکستانی شہریوں سے متعلق معلومات کو باقاعدگی سے پاکستانی وزارت خارجہ سمیت پاکستانی حکام کے ساتھ شیئر کیا جا رہا ہے۔پاکستانی ہائی کمشنر نے کہاکہ پاکستانی شہریوں کی معلومات فراہم کر رہے ہیں تاکہ پاکستان سے خصوصی پروازوں کے بارے میں فیصلہ کیا جا سکے،پاکستانی ہائی کمیشن نیوزی لینڈ میں مقیم پاکستانیوں کے مسائل کو اولین ترجیح کی بنیاد پر حل کرنے کے لئے پوری کوشش کر رہا ہے۔ نیوزی لینڈ میں مقیم جو پاکستانی واپس جانا چاہتے ہیں وہ آن لائن فارم کے ذریعہ رجسٹر ہوں، نیوزی لینڈ میں مقیم پاکستانی شہری معلومات کے لیے ہائی کمیشن کی ویب سائٹ کو بھی سبسکرائب کریں۔

پاکستانی قونصل خانہ

مزید :

صفحہ آخر -