عوام کی مدد حکومت کا فرض، کسی پر احسان نہیں، عزت نفس سے نہ کھیلے: سراج الحق

    عوام کی مدد حکومت کا فرض، کسی پر احسان نہیں، عزت نفس سے نہ کھیلے: سراج ...

  

لاہور(این این آئی)امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہاہے کہ احساس پروگرام والوں کو لوگوں کی عزت نفس کا کوئی احساس نہیں، امداد لینے آئے لوگ جان سے ہاتھ دھو بیٹھتے ہیں،لوگوں کی مدد کرنا حکومت کا فرض ہے وہ کسی پر احسان نہیں کر رہی، حکمرانوں کو لوگوں کی عزت نفس سے کھیلنے کا کوئی حق نہیں، لاک ڈاؤن کے دوران ضروری انتظامات کرنے میں خود حکومت کی ناک ڈاؤن ہو گئی ہے، ملتان میں دو خواتین جاں بحق اور 20 زخمی ہو گئی ہیں، خواتین پر تشدد کے واقعات سامنے آرہے ہیں جو ہماری اخلاقی صورتحال پر سوالیہ نشان ہیں۔ گزشتہ روز یہاں جماعت اسلامی وسطی پنجاب کے امرائے اضلاع کے جلاس سے خطاب کرتے ہوئے سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ حکومت نے اس موقع پر بھی عوام کو ریلیف نہ دیا اور مستحقین کی امداد میں ناکام رہی تو اس سے بڑا کوئی ظلم نہیں ہوگا۔ ملک بھر میں لوگوں کے کاروبار بند ہیں۔ چھوٹا کاروباری طبقہ پس کر رہ گیاہے اور ان کے کاروبار ہی ختم ہوچکے ہیں۔ مزدوروں، خاص طور پر دیہاڑی داروں کے گھروں میں فاقہ کشی کی نوبت ہے۔ حکومت کے پاس نادار اور حق دار لوگوں کا کوئی ڈیٹا نہیں۔ امدادی رقوم کی چھینا جھپٹی کے واقعات معمول بن گیا ہے۔کرونا وباء کے خلاف لڑنے والے طبی عملے کو بروقت حفاظتی کٹس نہ ملنے کی وجہ سے کراچی اور ملتان سمیت کئی شہروں میں ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل سٹاف کے کرونا وبا میں مبتلا ہونے کی خبروں نے ہر جگہ خوف و ہراس پھیلادیاہے اور حکومت نااہلی اور بے حسی کھل کر سامنے آگئی ہے۔ ڈاکٹر ڈیڑھ ماہ سے احتجاج کررہے تھے کہ ان کا تحفظ کیا جائے اور انہیں حفاظتی لباس اور کٹس مہیا کی جائیں مگر حکومت مسلسل ٹال مٹول کرتی رہی اور چین سے آنے والا حفاظتی سامان بھی مناسب طریقے سے تقسیم نہیں کر سکی۔ حکومت دعوے کرتی رہی کہ حفاظتی سامان طبی عملے کو فراہم کردیا گیا مگر درجنوں ڈاکٹرز کے کرونا میں مبتلا ہونے کے انکشاف نے حکومتی دعوؤں کی قلعی کھول دی۔ ڈاکٹروں کی صحت اور جان کی حفاظت کو یقینی بنانا حکومت کی ذمہ داری ہے جسے پورا کرنے میں حکومت اب تک ناکام نظر آتی ہے۔

سراج الحق

مزید :

صفحہ آخر -