کرونا سے بچاؤ کیلئے سامان کی تقسیم میں اپنوں کو نوازنے کا انکشاف

کرونا سے بچاؤ کیلئے سامان کی تقسیم میں اپنوں کو نوازنے کا انکشاف

  

لاہور(جنرل رپورٹر)ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن پنجاب نے انکشاف کیا ہے کہ بیرون ممالک سے کرونا وائرس کا حفاظتی سازوسامان ہسپتالوں کے ڈاکٹرز اور دیگر عملہ کو ملنے کی کی بجائے سیاستدانوں اور افسر شاہی اور ان کے بچوں میں تقسیم ہو رہا ہے، پنجاب کی وزیر صحت مکمل طور پر ناکام ہوچکی ہے وزیراعظم انہیں ہٹا کر ان کی جگہ کوئی اہل وزیر لگائیں اس امر کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز میڈیا سے گفتگو کے دوران کیا گفتگو کرنے والوں میں وائی ڈی اے پنجاب کے صدر ڈاکٹر سلمان حسیب سیکریٹری جنرل ڈاکٹر قاسم اعوان پنجاب کے چیئرمین ڈاکٹر خضر حیات سروسز ہسپتال کے چیئرمین ڈاکٹر محمود الحسن جبکہ سینئر نائب صدر ڈاکٹر عاطف مجیب چوہدری کے نام شامل ہیں انہوں نے کہا کہ چائنہ اور دوسرے ممالک سے ڈاکٹرز، نرسز اور پیرامیڈکس کے لئے آنے والے سامان میں سنگین گھپلے۔ سامان وزراء اور سیاستدانوں میں بانٹ دیا گیا۔ہے مگر افسوس حفاظتی سامان کی شدید کمی کے باعث ڈاکٹرز، نرسز اور پیرامیڈکس کرونا کا شکار ہو رہے ہیں۔ہم پاکستان آرمی کے شکر گزار ہیں جنہوں نے حفاظتی سامان کی ترسیل کا ذمہ خود لے لیا ہے۔ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ اگر ملک میں کرونا کا مقابل کرنا ہے تو فی الفور ایمرجنسی نافذ کر دی جائے۔ملک کے نمائندہ حکمران اس ملک کو تباہی کی طرف دھکیل رہے ہیں۔غیر نمائندہ ڈاکٹر یاسمین راشد کی نااہلی کے باعث پنجاب میں سینکڑوں جانوں کے ضیاع کا خدشہ ہے دریں اثناء ملتان کے عہدے درانینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن ملتان ڈاکٹر محمد فاران اسلم صدر،ڈاکٹر عتیق الرحمن چیرمین،ڈاکٹر عدنان ملک جنرل سیکرٹری،ڈاکٹر رانا انصرمیڈیا سیکرٹری۔نے کہا کہ نشتر انتظامیہ کورونا کے خلاف لڑنے میں بری طرح فیل ہو چکی ہے اور بیشتر ڈاکٹرز، نرسز اور پیرامیڈیکس ایکسپوز ہو چکے ہیں۔ نشتر کے عملہ میں کورونا کے پھیلاؤ کی زمہ داران نشتر کے وائس چانسلر، پرنسپل اور میڈیکل سپرنٹینڈنٹ کو استعفی دینا چاہیے جو ڈاکٹر پازیٹو آئے ہیں یہ ملتان اور نشتر انتظامیہ کی زمہ داری ہے کہ انکو نشتر کے گردونواح میں پرائیویٹ ہوٹلز اور پرائیوٹ ہسپتالوں میں آئسؤ لیٹ کیا جائے۔جو نیگیٹو آئے ہیں انکو بھی چودہ دن کیلئے قرنطینہ کیا جائے کیونکہ انکا بھی کورونا والے مریض کے ساتھ ایکسپوزر ہے۔

ینگ ڈاکٹرز

مزید :

صفحہ آخر -