بے احتیاطی کرونا وائرس کو گاڑی کے اندر منتقل کر دیگی

          بے احتیاطی کرونا وائرس کو گاڑی کے اندر منتقل کر دیگی

  

لاہور(جنرل رپورٹر) کرونا وائرس کی عالمی تباہی کی لپٹ میں ہر کوئی ہے۔ یہ وبا دنیا کے مختلف ممالک میں تیزی سے ایک انسان سے دوسرے انسان تک پھیل رہی ہے۔تاہم ایک حیران کن بات سامنے ائی ہے یہ گاڑی سے متعلق ہے کہ کورونا وائرس گاڑی میں کہاں چھپا ہو سکتا ہے۔تفصیلات کے مطابق گھر سے باہر جانے کی صورت میں ہم کچھ لمحوں کے لیے اپنے ہاتھوں کو کورونا وائرس کے خلاف جراثیم سے پاک کرنا بھول جاتے ہیں۔اس دوران ہمیں احساس تک نہیں رہتا کہ گاڑی کے اندر ہم اپنے ارد گرد موجود چیزوں کو چْھو رہے ہیں۔ بس یہ ہی بھول چوک کے لمحات ہوتے ہیں جب ہم ممکنہ طور پر کووڈ - 19 وائرس کو گاڑی کے اندر منتقل کر دیتے ہیں۔ایس ہی کچھ گاڑی میں ان جگہاؤں کے بارے میں بتاتے ہیں جہاں کرونا وائرس چھپا بیٹھا ہو سکتا ہے، اسٹیرنگ وہیل، گیئر لیو، ٹیپ ریکارڈر، ایئرکنڈیشنر کنٹرول کرنے کے بٹن، گاڑی کی کھڑکیاں کھولنے کے لیور، دروازے کھولنے کے اندرونی اور بیرونی لیور، لائٹس کے سوئچ، ہینڈ بریک، ڈیش بورڈ کا لیور، عقبی آئینہ (بیک مِرر)، گاڑی کی چابی، گاڑی کی ڈکی کھولنے کا لیور، اسمبلی اسٹک، کروز کنٹرول ڈیوائس، چار اشاروں کی تنبیہی لائٹس (فلیشر) کا سوئچ، گاڑی میں AUX جیک وغیرہ ہیں

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -