تحصیل نورنگ کی انتظامیہ آپے سے باہر شہریوں پر تشدد

تحصیل نورنگ کی انتظامیہ آپے سے باہر شہریوں پر تشدد

  

سرائے نورنگ(نمائندہ پاکستان)تحصیل نورنگ کی انتظامیہ آپے سے باہر ہوکر شہریوں پر تشدد پر اتر آئی۔ اس سلسلے میں وقاص اورتوصیف نے نہ صرف شدیدالفاظ میں مذمت کی بلکہ ایسے حرکات کو انسان کی تذلیل قراردیا۔تفصیلات کے مطابق جب سے ملک میں کوروناوائرس نے وبائی صورت اختیار کر لی ہے تب سے حکومت نے دیگراحتیاطی تدابیر کے ساتھ ساتھ بازاروں میں لاک ڈاون،ٹرانسپورٹ پرپابندی سمیت دیگر سرگرمیوں پر پابندیاں عائد کردی ہے ضلع لکی مروت ایک پسماندہ ضلع ہونے کے باعث یہاں کے عوام ایک وقت روٹی کے لئے ترس رہے ہیں کیونکہ یہاں دیگر اضلاع کی نسبت غربت کی شرح زیادہ ہے تاہم جب شہری بازارکارخ کرتے ہیں توتحصیل نورنگ کی انتظامیہ بزرگ شہریوں پررحم کرنے کی بجائے تشدد پر اتر آتی ہے اور بزرگ شہریوں پرتشددکرتی ہے۔گزشتہ روز نورنگ بازار میں واقع ایک انتہائی معززشخصیت حاجی عبدالحمیدجو ایک کمرے میں ہوٹل چلاتے ہے اور اپنے اہل و عیال کا پیٹ پالتے تھے، پر اے اے سی نورنگ آمین اللہ نے مبینہ طور پر تھپڑرسیدکرکے تشدد کیا اورزمین پرگھسیٹاعبدالحمیدنے بتایاکہ وہ ایک غریب بندیے ہم نے کوئی قانون کی خلاف ورزی نہیں کی اورایک شریف خاندان سے تعلق رکھتاہے تحصیل انتظامیہ کی اس اقدام کو وقاص خان اورتوصیف خان نے شدیدالفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہاہے کہ وزیراعظم عمران خان بارباربیوروکریسی متنبہ کرتے ہیں کہ بزرگ اورشریف لوگوں کے ساتھ خوش اخلاقی دے پیش آئے تاہم اس کے باوجود تحصیل نورنگ کی انتظامیہ وزیراعظم عمران خان اوراعلی حکام کی ہدایات کامذاق اڑارہی ہے جوکہ افسوسناک ہے انہوں نیوزیراعلی خیبرپختونخوا،چیف سیکرٹری،کمشنربنوں اور ڈپٹی کمشنر لکی مروت عبدالحسیب سے مطالبہ کیاہے کہ نہ صرف ایسے حرکات کی فوری سددباب کیاجائے بلکہ مذکورہ واقعہ پربھی سخت ایکشن لیں تاکہ آئندہ انتظامیہ بزرگ شہریوں پر ہاتھ رکھنے سے پہلیہزاربارسوچیں گی

مزید :

پشاورصفحہ آخر -