قصبہ گجرات‘ سکول گیٹ کھلنے پر سینکڑوں خواتین کا دھاوا‘ دو شدید زخمی

  قصبہ گجرات‘ سکول گیٹ کھلنے پر سینکڑوں خواتین کا دھاوا‘ دو شدید زخمی

  

ملتان‘قصبہ گجرات (سٹاف رپورٹر‘ نامہ نگار) احساس ایمرجنسی کیش پروگرام‘ گزشتہ روز اتوارکوبھی سنٹرز کھلے رہے‘ ہجوم میں کرونا وائرس پھیلنے کے خدشے کے تحت سماجی فاصلے کی حکومتی ہدایات کو نظر انداز کر دیا گیا س موقع پرصوبائی وزیر اور ممبران اسمبلی نے متاثرین کے (بقیہ نمبر38صفحہ6پر)

لئے گئے انتظامات چیک کئے اور کیش کاؤنٹرز پر ادائیگی کے طریقہ بارے سوالات کئے۔انہوں نے حبیب بنک اور کونیکٹ کمپنی کے نمائندوں سے گفتگو بھی کی۔اس موقع پر صوبائی وزیر ر ڈاکٹر اختر ملک نے کہا کہ احساس ایمرجنسی کیش پروگرام پاکستان کی تاریخ کا سب سے بڑا پیکج ہے،کورونا وائرس کی وباء نے پوری دنیا کی معیشت اور کاروبار کو متاثر کیا ہے،لاک ڈاؤن سے روزانہ اجرت حاصل کرنیوالے افراد بری طرح متاثر ہوئے ہیں دریں اثنا رحیم یار خان اور لیاقت پور میں عوام کی مشکلات کے پیش نظر مزید 2‘2نئے سنٹرز قائم کئے گئے ہیں۔آج بھی سنٹرز کھلے رہیں گے۔ احساس پروگرام سینٹر قصبہ گجرات ناقص انتظامات کی بنا پر خواتین کے لیے مسائل کی آماجگاہ بن گیا' آچانک سکول کا گیٹ کھلنے پر سینکڑوں خواتین سنٹر کے اندر آنے کی وجہ سے ایک دوسرے پر گر پڑی دو بوڑھیخواتین شدید زخمی ہوگئیں۔ تفصیل کے مطابق احساس پروگرام کے تحت غریب مستحق خواتین میں امدادی رقوم کی تقسیم کے لیے بنائے جانے والے گرلز ہائی سکول قصبہ گجرات سینٹرمیں ناقص انتظامات ہونے کی وجہ سے مسائل سامنے آنا شروع ہو چکے ہیں ہیں گزشتہ روز احساس پروگرام سینٹر کے باہر سینکڑوں خواتین اندر داخل ہونے کے لئے کھڑی ہوئی تھی اچانک گیٹ کھلنے کی وجہ سے خواتین کے جتھے نے اندر آنے کی کوشش کی کی تو دھکم پیل کی وجہ سے ایک خورشید مائی نامی بوڑھی عورت دم گھٹنے کی وجہ سے بے ہوش جبکہ سکینہ بی بی نیچے دبنے کی وجہ سے شدید زخمی ہوگئیں اور اس بھگدڑ کا فائدہ اٹھاتے ہوئے اصغر علی نامی شخص بھی سنٹر کے اندر کیمرہ اٹھا کر پہنچ گیا گیا جہاں اس نے انتظامیہ کو کسی تنظیم کا نمائندہ ظاہر کرتے ہوئے خواتین ٹیچرز کے کمروں میں تانکا جھانکی کرنے کے علاوہ وہ انتظامیہ کے کچھ لوگوں کے ساتھ ویڈیو بناتے ہوئے ان کے ساتھ سیلفیاں بھی بنوائیں سیلفیاں لینے پر سکول ہیڈ ماسٹر س ثمینہ خالد کو ناگوار گزرا تو تو انہوں نے نے اصغر نامی شخص سے اپنے عہدے کی شناخت کر آنے کو کہا تو وہ کوئی تسلی بخش جواب نہ دے سکا جس پر ہیڈمسٹرس نے مقامی پولیس کے ذریعے اسے گرفتار کراتے ہوئے پولیس کے حوالے کردیا تاہم پولیس نے ابھی تک اصغر علی کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی کی سکول ہیڈ ماسٹرز اور احساس سینٹر قصبہ گجرات کی انچاج ثمینہ خالد نے مقامی صحافیوں کو بتایا یا کہ اصغر علی نے سنٹر میں گھس کر جو غیر اخلاقی اور غیر قانونی حرکت کی ہے وہ قابل مذمت ہے۔

دھاوا

مزید :

ملتان صفحہ آخر -