’غربت ‘کے ہاتھوں تنگ برطانوی وزیر مستعفیٰ

’غربت ‘کے ہاتھوں تنگ برطانوی وزیر مستعفیٰ
’غربت ‘کے ہاتھوں تنگ برطانوی وزیر مستعفیٰ

  


لندن (نیوز ڈیسک) برطانوی محکمہ خارجہ کے وزیر مارک سمنڈر نے یہ کہا کہ سیاست اور وزارت سے استعفیٰ دے دیا ہے کہ اس کی 120000 پاﺅنڈ سالانہ (تقریباً 20 کروڑ پاکستانی روپے) کی تنخواہ اس کے اخراجات پورے کرنے کے لئے ناکافی ہے۔

وزیر کا کہنا ہے کہ اس کا خاندان لنکن شہر میں آباد ہے اور اسے حکومتی ذمہ داریوں کی وجہ سے ہفتہ کے زیادہ تر دن لندن کے ہوٹلوں میں کرائے پر رہنا پڑتا ہے جس کے اخراجات وہ برداشت نہیں کرپارہا۔ اس نے بتایا کہ اسے اپنے بیوی بچوں کے اخراجات بھی پورے کرنا ہوتے ہیں لیکن مہنگے ہوٹلوں کے اخراجات اس قدر زیادہ ہیں کہ وہ اپنے بچوں کو مناسب رقم فراہم نہیں کرسکتا۔ اس کا یہ بھی کہنا ہے کہ سیاسی اور حکومتی ذمہ داریوں کی وجہ سے اس کا زیادہ تر وقت گھر سے باہر گزرتا ہے اور وہ اپنے خاندان اور خصوصاً بچوں کو وقت نہیں دے پارہا۔مارک کو سالانہ 89435 پاﺅنڈ بطور تنخواہ اور 27875 پاﺅنڈ اپنے اور خاندان کیلئے فلیٹ کرائے پر لینے کیلئے دئیے جاتے ہیں۔ پچھلے ایک ہفتے کے دوران یہ حکمران جماعت کے دوسرے وزیر کا استعفیٰ ہے۔ اس سے پہلے مسلمان وزیر سعیدہ وارثی حکومت کی غزہ پالیسی سے اختلاف کی وجہ سے مستعفی ہوچکی ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...