پٹوار سرکل بیگم کوٹ میں پٹواری پر رشتہ داروں سے کام کروانے کا الزام

پٹوار سرکل بیگم کوٹ میں پٹواری پر رشتہ داروں سے کام کروانے کا الزام ...

                 لاہور (اپنے نمائندے سے )شاہدرہ قانون گوئی تحصیل سٹی کی حدود میں آنیوالے پٹوار سرکل بیگم کوٹ کے پٹواری نے ذہنی طور پر مفلوج ہونے اور کام کے دوران دورے پڑنے کے باعث پٹوار سرکل رشتہ داروں کے حوالے کر دیا پرائیوٹ رشتہ داروں نے اختیارا ت کا ناجائز استعمال کرنے ،رشوت وصولی کی پریکٹس عام کرنے اور پرچہ رجسٹری قانون کی دھجیاں اڑانے میں ضلع لاہور کے تمام پٹوار سرکلوں کو پیچھے چھوڑ دیا ہے شہریوں کی کثیر تعداد پٹواری کے ابنارمل پن اور اس کے رشتہ لو ٹ کھسو ٹ کے خلاف سراپا احتجاج بن گئے ڈی سی او لاہور سے نواں تبدیلی کا مطالبہ کیا گیا ہے روزنامہ پاکستان کی جانب سے کیے جانے والے سروے کے دوران معلوم ہوا کہ پٹوار سرکل بیگم کوٹ میں تعینات پٹواری بابر میو اور اس کے پرائیوٹ رشتہ داروں کی جانب سے ریونیو ریکارڈ میں سینکڑوں ایسے انتقالات تصدیق کروانے کا انکشاف ہوا ہے جوکہ سابقہ ریکارڈ سے مطابقت نہ رکھتے ہیں جو کہ زائد از حصہ تصدیق کروائے گئے ہیں جبکہ بعض فرضی رجسٹریوں اور فر ضی افراد پر مشتمل لینڈ مافیا کے ساتھ ساز باز کرتے ہوئے جعلی وراثتیں اور انتقالات تصدیق کروائے جانے کے بھی انکشافات ہوئے ہیں روزنامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے شہریوں محمد افضل ،رمضان علی ،نوید اختر ،نے بتایا کہ پٹواری حلقہ بابر میو ذہنی طور پر ابنارمل ہیں مذکورہ پٹواری کو پٹوار کی الف ب بھی نہیں آتی ہے اور اکثر اوقات پٹوار خانے میں دورے پڑنے کے باعث مذکورہ پٹواری ادویات کا استعمال کر کے پٹوار خانے کے اند ر بنائے گئے کمرے میں سویا ہوا نظر آتا ہے جبکہ پٹوارسرکل بیگم کوٹ مکمل طور پر مذکورہ پٹواری کے پرائیوٹ رشتہ داروں کے قبضے میں ہے جن میں جمشید نامی نوجوان سر فہرست ہے جو کہ خود کو پٹواری حلقہ کا بھانجا ظاہر کرتا ہے اس کے علاوہ بھی 3عدد پرائیوٹ منشی ہیں جن میں اعجاز مذکورہ پٹواری کا برادر نسبتی اور غلام فرید نامی پرائیوٹ منشی کے طور پر کام کر رہے ہیں اپنی مرضی کے منہ مانگے رشوت شہریوں کو بلیک میل کرتے ہوئے وصول کی جارہی ہے شہری عدنان علی ،عمر عاطف ،نعمان لیاقت نے الزام عائد کیا کہ مذکورہ پٹواری کی جانب سے پرچہ رجسٹری قانون کی بھر پور طریقے سے دھجیاں اڑائی جارہی ہیں اعلی افسران کا نام استعما ل کرتے ہوئے شہریوں سے سر عام انتقالات کی مد میں 5000جبکہ فرد جاری کرنے کے عوض 3500روپے وصو ل کیے جارہے ہیں شہری احسن ندیم ، تنویر شاہ ،اور محبوب عالم نے الزان عائد کیا کہ پٹوار سرکل بیگم کوٹ میں ریونیو کے قوانین کی کھلم کھلہ خلاف ورزی کی جارہی ہے اعلی افسران کی دی جانے والی درخواستیں یا تو غائب کر دی جاتی ہیں یا پھر کوئی شنوائی نہیں کی جارہی ہے پٹواری حلقہ کے پرائیوٹ رشتہ داروں کی لوت کھسوٹ اور رشوت وصولی کی بڑھتی ہوئی ڈیمانڈ کے باعث اب بلیک میلنگ قوت برداشت سے باہر ہوتی جارہی ہے اگر مذکورہ پٹواری کے خلاف محکمہ ریونیو کے ڈی سی او لاہور ،ایڈیشنل کلکٹر اور اسسٹنٹ کمشنر نے سخت قانونی کاروائی عمل میں نہ لائی تو پھر بیگم کوٹ کے تما م رہائشی سڑکوں پر آکر احتجا ج کریں گے شہریوں نے مزید مطالبہ کیا ہے کہ پٹوار سرکل بیگم کوٹ میں تصدیق ہونے والے انتقالات کی فوری طو ر پر انسپکشن کی جائے تاکہ محکمہ ریونیو کے افسران کو علم ہوسکے کہ ریونیو ریکارڈ میں کس حد تک درو بدل کی گئی ہے اور کس طرح انتقالات کی تصدیق کے دوران ریونیو قوانین کو مصخ کیا گیا ہے

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...