متروکہ وقف املاک بورڈ کے قاصد مولوی شبیر کے اعزاز میں الوداعی تقریب

متروکہ وقف املاک بورڈ کے قاصد مولوی شبیر کے اعزاز میں الوداعی تقریب

لاہور(خبر نگار)متروکہ وقف املاک بورڈپاکستان( چیئر مین آفس) کے قاصد مولوی شبیر احمد اپنی چالیس سالہ مدت ملازمت پوری کر نے کے بعدریٹائرڈ ہو گئے برانچ کے سٹاف نے انکے اعزاز میں ایک الودائی تقریب منعقد کی جس میں سٹاف آفیسر ٹو چیئر مین ای ٹی پی بیظفر اقبال مہمان خصوصی تھے جبکہ بورڈ کے پی آر او عامر حسین ہاشمی ،محمد جنید ،محمد شہزاد ،عمران ثناء،محمد گلستا ن سمیت دیگر ملازمین کی بڑی تعداد نے شرکت کی اس موقع پر ایس او ظفر اقبال نے انتہائی تعریفی کلمات اور مولوی شبیر کی سروس کے دوران کی گئی خدمات کو خوب الفاظ میں سراہتے ہوئے انہیں سٹاف ملازمین کی جانب سے خصوصی تحائف اور پھولوں کے گلدستے کے ساتھ رخصت کیا انہوں نے کہا کہ مولوی شبیر نے اپنی ڈیوٹی انتہائی ایماندار ی اور نیک نیتی سے سر انجام دی انکی خدمات کی ہمیشہ یاد رکھا جائے گا ،جبکہ مولوی شبیر اپنی آنکھوں میں خوشی کے آنسو سجائے دفتر سے رخصت ہوئے ۔

ضلعی حکومت کے زیر اہتمام یوم آزادی کے حوالے سے قائد کا پاکستانکے عنوان سے سیمینار                                        لاہور(کامرس رپورٹر)ضلعی حکومت کے زیر اہتمام یوم آزادی تقریبات کے سلسلے میں گزشتہ روز ٹاﺅن ہال ”قائد کا پاکستان“ کے عنوان سے سیمینار کا انعقاد ہوا۔ تقریب کی مہمان خصوصی جسٹس (ر) ناصرہ جاوید اقبال تھیںجبکہ صدارت معروف دانشور افضال ریحان نے کی۔ دیگر مقررین میں صوبائی پارلیمانی سیکرٹری اطلاعات رانا محمد ارشد، اقلیتی رہنما الیگزینڈر جان ملک، رکن صوبائی اسمبلی باﺅ اختر، معروف کالم نگار سجاد میراور اینکر پرسن نجم ولی خان نے شرکت کی۔جسٹس ناصرہ جاوید اقبال نے اپنے خطاب میں کہا کہ قائد اعظم محمد علی جناح پاکستان کو ایک جمہوری اور فلاحی ریاست کے طور پر دیکھتے تھے ، انہوں نے آج ہی کے دن وطن عزیز کی پہلی دستور سازی اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے فرمایہ تھا کہ پاکستان میں سیاسی طور پر مسلم اور غیر مسلم کی قطعی کوئی تمیز روا نہیں رکھی جائے گی اور ریاست پاکستان کے سب شہری برابر ہوں گے۔ انہوں نے بتایا کہ پاکستان کا پہلا وزیر قانون ایک ہندوجوگندر ناتھ منڈل کو مقرر کیا اور سر ظفر اللہ کو پہلا وزیر خارجہ مقرر کیا۔ میثاق مدینہ کی روشنی میں انہوں نے پاکستان میں قومیتی مسئلہ ہمیشہ کیلئے حل کر دیا تھا لیکن افسوس قائد کی رحلت کے بعد ان کی تعلیمات کو پس پشت ڈال دیا گیا اور پاکستان کو ایک جمہوری ریاست بنانے کی بجائے فوجی آمروں نے ایک آمرانہ ریاست بنا دیا۔صوبائی پارلیمانی سیکرٹری رانا ارشد نے اپنے خطاب میں کہا کہ مسلم لیگ ن کی ملک کیلئے بے پناہ خدمات ہیں، وزیر اعظم نواز شریف اور وزیر اعلیٰ شہباز شریف کی رہنماﺅں میں قوم نے تعمیر و ترقی کے جس سفر کا آغاز کیا تھا افسوس کچھ نادیدہ قوتوں کے اشاروں پر ایک کھلاڑی اور دوسرا کینیڈین شہری سب کچھ برباد کر دینا چاہتے ہیں ان کا ایجنڈا بربادی کا ایجنڈا ہے۔مسیحی رہنما الیگزینڈر جان ملک نے کہا کہ مسیحی پاکستان میں دوسرے درجے کے شہری نہیں ہیں۔ پاکستان بنانے میں انہوں نے قائد اعظم کی قیادت میں بھرپور حصہ لیا تھا اور پاکستان بننے کے بعد اس کی تعمیر و ترقی میں بھی مسیحیوں کے کردار کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔ افضال ریحان نے اپنے خطاب میں کہا کہ پیغمبر اسلام نے میثاق مدینہ میں جس طرح مسلم اور غیر مسلم کی سیاسی تقسیم کو ختم کرتے ہوئے ”امت واحدہ“ جیسی متحدہ قومیت کی اصطلاح استعمال فرمائی۔ اس طرح قائد اعظم محمد علی جناح نے بھی11 اگست کو اپنے خطاب میں ”پاکستانی قومیت“ کا دستوری اعلان فرمایا اور اقلیتوں کو یقین دلایا کہ زن کے ساتھ کسی بھی نوع کا کوئی امتیاز روا نہیں رکھا جائے گا۔ معروف دانشور سجاد میر نے ان لوگوں کی خوب خبر لی جو وطن عزیز کو قائد کی متعین کردہ راہوں سے ہٹانا چاہتے ہیں اور اس کا اسلامی جمہوری تشخص مجروع کرنا چاہتے ہیں۔ اینکر پرسن نجم ولی خان نے کہا کہ اگر وطن عزیز نے ترقی کر نی ہے تو اس کے علاوہ کوئی چارہ نہیں کہ اسے قائد اعظم کا پاکستان بنایا جائے۔رکن صوبائی اسمبلی باﺅ اختر نے حکومت پنجاب کی نمائندگی کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کی خدمات گنوائیں اور کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی ایک سالہ کارکردگی پر نظر ڈال لی جائے تو اس کی مخالفت سمجھ میں آ جائے گی۔انہوں نے کہا کہ قائد اعظم تو پاکستان کو اسلامی ، جمہوری، فلاحی اور جدید ملک بنانا چاہتے تھے لیکن عمران خان اور طاہر القادری ملک و قوم کو برباد کرنا چاہتے ہیں ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...