عوامی تحریک پر پابندی کیلئے درخواست کی سماعت کیلئے لارجر بنچ بنا نیکی سفارش

عوامی تحریک پر پابندی کیلئے درخواست کی سماعت کیلئے لارجر بنچ بنا نیکی سفارش

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس شاہد بلال حسن نے پاکستان عوامی تحریک پر پابندی لگانے کے لئے دائر درخواست کی سماعت کے لئے لارجر بنچ بنانے کی سفارش کرتے ہوئے فائل واپس چیف جسٹس کو بھجوادی ہے۔یہ درخواست دو شہریوں امجد اور اعجاز نے فہد صدیقی ایڈووکیٹ کی وساطت سے دائر کی ہے جس میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری کے بیانات کی وجہ سے ملک میں امن و امان کی صورتحال پیدا ہوگئی ہے ۔مقصد حاصل ہونے تک مارو یا مر جاﺅ کا ان کا بیان ریکارڈ پر موجود ہے جس سے ظاہر ہوتا ہے کہ طاہر القادری ملک میں اشتعال پھیلا رہے ہیں ۔درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ وفاقی حکومت کو آئین کے آرٹیکل 17(2)کے تحت پاکستان عوامی تحریک پر پابندی لگانے کا حکم دیا جائے ۔درخواست میں مزید استدعا کی گئی ہے کہ ڈاکٹر طاہر القادری کو اشتعال انگیز تقاریر کرنے سے روکا جائے ۔گزشتہ روز مسٹر جسٹس شاہد بلا ل حسن نے اس درخواست کی ابتدائی سماعت کی اور اس میں موجود نکات کو تشریح اور فیصلہ طلب گردانتے ہوئے اس کی سماعت کے لئے لارجر بنچ بنانے کی سفارش کردی۔

لارجر بنچ

مزید : علاقائی


loading...