شرقپور کے میڈیکل آفیسر پر مریض کے لواحقین کا حملہ

شرقپور کے میڈیکل آفیسر پر مریض کے لواحقین کا حملہ


شرقپورشریف(نامہ نگار)تحصیل ہسپتال شرقپور کے میڈیکل آفیسر پر مریض کے لواحقین کا حملہ زدوکوب اور گالی گلوچ کرنے کے بعد ہسپتال سے فرار تحصیل ہسپتال کے پیرامیڈیکل سٹاف اور ڈاکٹرز کی ہڑتال ڈی سی او شیخوپورہ علی جان خان نے واقع کا نوٹس لے لیا ۔بتایا گیا ہے کہ گزشتہ رات 10بجے تحصیل ہسپتال شرقپور میں نواحی گاؤں ملی والا کی ایک خاتون ایمرجنسی میں لائی گئی جس کو ڈیوٹی پر موجود میڈیکل آفیسر ڈاکٹر عمرنے فوری طور پر طبی امداد دی اور میڈیکل چیک اپ کیا لیکن خاتون کے لواحقین بلا وجہ مشتعل ہوگئے اور رفاقت نامی نوجوان نے ڈاکٹر عمر کو غلیظ گالیاں دیں اور شدید تشدد کا نشانہ بنایااور ڈاکٹر کو تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد اپنے مریض کو لے کر چلے گئے جس پر تحصیل ہسپتال کے تمام عملے ڈاکٹرز پیرا میڈیکل سٹاف نے ہڑتال کر دی جس پر ڈی سی او شیخوپورہ علی جان خان نے واقع کا نوٹس لیتے ہوئے واقع کی رپورٹ طلب کر لی ہے اور ایس ایچ او تھانہ شرقپور چوہدری اکرم گجر نے ڈاکٹر عمر کی درخواست پر رفاقت نامی نوجوان پر مقدمہ درج کر لیا ہے۔تحصیل ہسپتال کے ایم ایس ڈاکٹر شوکت علی شیخ ،ڈاکٹر عبد القدیر،فیض میراں اور محمد جمیل نے واقع کے متعلق گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ آئے روز تحصیل ہسپتال میں ڈاکٹرز اور سٹاف کے ساتھ توہین آمیز سلوک کیا جاتا ہے لیکن ہم انسانی ہمدردی کے تحت خاموش ہیں اور آئے روز ڈاکٹرز کے ساتھ ایسے واقعات رونما ہورہے ہیں انتظامیہ کو چاہیئے کہ ہسپتال میں پولیس تعینات کی جائے جو کسی بھی واقع پر کاروائی کر سکے اور ایسے واقعات نہ ہوں۔ڈاکٹرز لاہور سے روزانہ سفر طے کرکے آتے ہیں اگر ایسے واقعات ہوں گے تو وہ شرقپور جیسے علاقوں میں ڈیوٹی نہیں کریں گے۔

مزید : علاقائی


loading...