بنیادی حقوق کا تحفظ،چیف جسٹس نے سپریم کورٹ کا لارجر بینچ تشکیل دیدیا

بنیادی حقوق کا تحفظ،چیف جسٹس نے سپریم کورٹ کا لارجر بینچ تشکیل دیدیا
بنیادی حقوق کا تحفظ،چیف جسٹس نے سپریم کورٹ کا لارجر بینچ تشکیل دیدیا

  


اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک ) سپریم کورٹ نے ریاست کے تمام انتظامی اور آئینی سربراہان کو کسی بھی ماورائے آئین اقدام سے روکنے کی درخواست پر سماعت کیلئے لارجر بنچ تشکیل دیدیا، عدالت نے وفاق کو نوٹس جاری کرتے ہوئے درخواست 15اگست کو سماعت کیلئے مقرر کر دی ہے ۔تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے صدرکی درخواست کی سماعت کیلئے چیف جسٹس ناصرالملک کی سربراہی میں5 رکنی لارجر بینچ تشکیل دیکر 15اگست کو سماعت کیلئے وفاق کو نوٹس جاری کر دیا، لارجر بینچ میں جسٹس جواد ایس خواجہ،جسٹس ثاقب نثار، جسٹس آصف سعید کھوسہ اور جسٹس مشیر عالم شامل ہیں۔صدر سپریم کورٹ بار کامران مرتضیٰ نے درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ کچھ سیاسی و مذہبی جماعتیں موجودہ نظام کیخلاف احتجاج کر رہی ہیں اور ان کے مارچ کے اعلانات سے تمام جمہوری اور قانونی نظام داﺅپر لگ گیا ہے، ملک کے ہر شہری کو بے یقینی کی اس کیفیت پر تشویش ہے، احتجاج انتخابی دھاندلی اور کرپشن کیخلاف کیا جا رہا ہے جبکہ ان شکایات کے ازالے کیلئے مناسب فورم موجود ہے، چند ہفتوں کے حالات نے عوام کی زندگیاں اور آزادی خطرے میں ڈال دی ہے۔درخواست میں مزید موقف اختیار کیا گیا کہ آئین سے انحراف پر مبنی مطالبات کی اجازت نہیں دی جا سکتی اسلئے ریاست کے تمام انتظامی اور آئینی سربراہان کو کسی ماورائے آئین اقدام سے روکا جائے اور حکم جاری کیا جائے کہ کوئی ادارہ عوام کے بنیادی حقوق سلب نہ کرے اور سپریم کورٹ اس حوالے سے فوری طور پر عبوری حکم جاری کرے۔

مزید : اسلام آباد


loading...