اوباش کی پڑوسی خاتون سے زیادتی ، حاملہ کر دیا ، قتل کی دھمکیاں

اوباش کی پڑوسی خاتون سے زیادتی ، حاملہ کر دیا ، قتل کی دھمکیاں
اوباش کی پڑوسی خاتون سے زیادتی ، حاملہ کر دیا ، قتل کی دھمکیاں

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

بہاولنگر(ویب ڈیسک)نوجوان نے گھر میں گھس کر شادی شدہ دوشیزہ کو بدفعلی کا نشانہ بنا ڈالا، خاتون کے حاملہ ہونے پر پنچائیت بلائی گئی تو رشتہ دینے پرمعاملہ رفع دفع ہوگیا لیکن عمل درآمد نہ ہونے پر خاتون پولیس کے پاس پہنچ گئی لیکن تاحال کوئی کارروائی نہ ہوسکی ۔

 روزنامہ خبریں کے مطابق(ش) نے اپنے ساتھ ہونے والی زیادتی و ظلم کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ میری شادی سات سال قبل محمد ندیم سے ہوئی تھی اور چند گھریلو ناچاقیوں کی وجہ سے میں اپنے والدین کے گھر ککو بودلہ میں رہنے لگی ،ہمارے گھر کے ساتھ ہی عمران بودلہ بھی رہتا ہے اور اس کا ہمارے گھر آنا جانا ہے، چار ماہ قبل عمران بودلہ ہمارے گھر آیا اس وقت گھر میں کوئی نہ تھا، میں اکیلی تھی ،اس نے موقع پاکر میرے ساتھ زبردستی زیادتی کی اور دھمکی دی کہ اگر کسی کو بتایا تو تمہیں جان سے مار دوں گا ،میں عزت جانے کے خوف سے ڈر گئی اور کسی کو نہ بتایا مگر زیادتی کی وجہ سے میں حاملہ ہو گئی اور میں نے اپنے بھائی محمد شبیر کو بتایا اور ہم محمد جمیل بودلہ نمبردار کے پاس اپنی فریاد لیکر حق رسی کے لیے پہنچے تو اس نے پنچائیت بلائی اور عمران بودلہ کے والدین نے ہمیں رشتہ دینے کا وعدہ کیا مگر عرصہ دراز گزر جانے کے بعد بھی کوئی حق رسی نہ ہوئی جس پر ہم نے تھانہ صدر میں درخواست گزاری مگر پولیس نے کوئی کارروائی نہیں کی ۔

میں نے عدالت مین رٹ گزاری اور ڈیرھ ماہ گزرنے کے باوجو شہناز نامی تفتیشی نے عدالت عالیہ کو کوئی رپورٹ نہیں کی اور عمران بودلہ وغیرہ نے ہمیں دھمکیا ں دی اور میرا حمل بھی ضائع کروا دیا اور اب ہم در بدر کے دھکے کھانے پر مجبور ہیں ،پولیس ملزمان کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کر رہی ہے اور ہمیں دھمکیاں مل رہی ہیں میں ۔

مزید : علاقائی /پنجاب /بہاول نگر