مظلوم کشمیریوں پر مودی سرکار کی بربریت پر سابق بھارتی وزیر اعظم منموہن سنگھ بھی چپ نہ رہ سکے،بڑا مطالبہ کر دیا

مظلوم کشمیریوں پر مودی سرکار کی بربریت پر سابق بھارتی وزیر اعظم منموہن ...
مظلوم کشمیریوں پر مودی سرکار کی بربریت پر سابق بھارتی وزیر اعظم منموہن سنگھ بھی چپ نہ رہ سکے،بڑا مطالبہ کر دیا

  


نئی دہلی(ڈیلی پاکستان آن لائن)سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ نے کہا ہے کہ ہندوستان ایک بہت گہرے بحران سے گزر رہا ہے،اس بحران سے نمٹنے کےلئے ضروری ہے کہ ہندوستان میں بسنے والےہر مکتبہ فکر کے لوگوں کی بات کو سنا جائے،مودی  سرکار کی جانب سے جموں و کشمیر میں آرٹیکل 370 کا خاتمہ بھارت میں بسنے والے تمام طبقات اور جموں و کشمیر میں رہنے والے لوگوں کی پسند کا فیصلہ نہیں ہے،بھارتی حکومت کو جموں و کشمیر  کے لوگوں کی بات کو  بھی سننا  ہو  گا  ۔

بھارتی  نجی ٹی وی کے مطابق سابق ہندوستانی وزیر اعظم منموہن سنگھ نے  اپنے قریبی ساتھی جے پال ریڈی کے انتقال پر منعقدہ تقریب میں جموں و کشمیر میں آرٹیکل 370 کے خاتمے کے بعد  پہلی مرتبہ    میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ  آرٹیکل 370 کو ختم کیے جانے کا نریندرا مودی حکومت کا فیصلہ ہندوستان میں رہ رہے بہت سے لوگوں کی پسند کا فیصلہ نہیں ہے اور ہندوستان کے مرکزی خیال کے لئے ضروری ہے کہ ان سب لوگوں کو اور جمو ں و کشمیر کے لوگوں کی آواز کو سنا جائے۔انہوں نے کہا کہ اس وقت  ہندوستان ایک بہت گہرے بحران سے گزر رہا ہے اس لئے ضروری ہے کہ ہر  طبقہ فکر کے لوگوں کی بات سنی جائے،

مزید : بین الاقوامی