پاکستان سمیت دنیا بھر میں نوجوانوں کا عالمی دن منایا گیا

  پاکستان سمیت دنیا بھر میں نوجوانوں کا عالمی دن منایا گیا

  

تخت بھائی (تحصیل رپورٹر )پاکستان سمیت دنیا بھر میں نوجوانوں کا عالمی دن منایا گیا۔اقوام متحدہ کے تحت منائے جانے والے اس دن کا مقصد عالمی سطح پر نوجوانوں کو درپیش مسائل کا ازالہ کرنے کے ساتھ ساتھ ان کو غربت اور بے روزگاری کی دلدل میں پھنسنے سے بھی بچانا ہے۔اقوام متحدہ کے مطابق دنیا بھر میں تقریباً سوا 2 کروڑ افراد اقتصادی بحران کے باعث وطن چھوڑ کر دوسرے ملکوں کا رخ کرنے پر مجبور ہیں جن میں سے تقریباً21 لاکھ نوجوان ہیں۔جو اپنی منزل پر پہنچنے تک قوانین اور مقامی ثقافت سے ناواقفیت کی بنا پر ان نوجوانوں کو نسل پرستی، انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں اور حقارت کا سامنا کرنا پڑتا ہے بالخصوص خواتین کو جنسی استحصال اور ناروا سلوک کا سامنا ہے۔ان خیالات کا آظہار فیملی پلاننگ ایسوسی ایشن اف پاکستان مردان دفتر کے زیر اہتمام نوجوانوں کے عالمی دن کے حوالے سے منعقدہ ایک روزہ سمینار سے تقریب کرتے ہوئے ڈسٹرکٹ پاپولیشن آفیسر مردان حاجی ملک تاج نے کیا  جس سے فیملی پلاننگ ایسوسی  مردان کے پروگرام منیجر سہیل اقبال کاکاخیل، ڈاکٹر قراۃالعین، صائقہ عثمان، نازش خان، محمد شاہد خان، حامد خان و دیگر نے بھی خطاب کیا انہوں نے کہا اقوام متحدہ نے 1998 میں پہلی بار عالمی یوم نوجوانان منانے کی منظوری دی تھی جس کے بعد سے اسے ہر سال دنیا بھر میں بھرپور جوش و جذبے سے منایا جاتا ہے۔اس وقت پاکستانی  قوم کا 64 فیصد 30  سال سے چھوٹا ہے اور 29 فیصد پاکستانیوں کی عمریں 15 سے 29 کے درمیان ہیں۔ پاکستان میں ہر سال یوتھ کی تعداد میں اضافہ ہوتا جار ہا ہے۔ 2050 تک اس کی تعدا د 65 سے 70 تک پہنچنے کا اندیشہ ہے۔اس کے ساتھ ساتھ پاکستان کو سب سے بڑا چیلنج آبادی میں بے تحاشہ اضافے کا ہے  ہر پانچ سیکنڈ بعد پاکستان میں ایک نیا شہری پیدا ہو رہا ہے۔ اس ضمن میں پاکستان کے  نوجوانوں  پر بھاری ذمہ داری عائد ہو جاتی ہے کہ اس چیز کو سنجیدگی سے سمجھے اور آئندہ  خود بھی سمجھے اور نوجوانوں کے ساتھ ساتھ دوسرے لوگوں کو بھی سمجھا ئے کہ پاکستان کی آبادی کو کنٹرول میں لاکر پاکستان کو پانچویں نمبر پر سے بھی کم نمبرپر آنے سے روک دیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -