بلدیاتی انتخابات کیلئے حلقہ بندیوں کا عمل جاری،21اگست کو فہرست جاری ہوگی

  بلدیاتی انتخابات کیلئے حلقہ بندیوں کا عمل جاری،21اگست کو فہرست جاری ہوگی

  

لاہور(نامہ نگار)صوبہ پنجاب میں بلدیاتی انتخابات کے انعقاد کیلئے حلقہ بندیوں کا عمل تیزی سے جاری ہے،الیکشن کمیشن کی جانب سے تمام متعلقہ افسروں اور عملے کو ہدایات جاری کی گئی ہیں کہ حلقہ بندیوں کے عمل کو غیر جانبداری اور شفاف طریقے سے سر انجام دیں اور کسی بھی قسم کے سیاسی دباؤ کو ملحو ظ خاطر نہ لائیں۔ صوبہ پنجاب کے36 اضلاع کے دیہی اور شہری علا قوں میں، پنجاب ویلج اینڈ پنچائیت ایکٹ اور نیبر ہوڈ کونسل ایکٹ 2019 کے تحت، تقریباً 25,240 بلدیاتی اداروں کی حلقہ بندی کی جائے گی۔اس مقصد کے لئے الیکشن کمیشن نے پنجاب کے ہر ضلع میں تین رکنی کمیٹی تشکیل دے دی ہے۔ یہ کمیٹی الیکشن کمیشن کی ہدایات اور قوانین کی روشنی میں حلقہ بندی کے عمل کو سر انجام دے گی۔ الیکشن کمیشن کے جاری کردہ شیڈول کے مطابق حلقہ بندی کمیٹیاں عملی طور پر 27 جولائی2020 سے باقاعدہ حلقہ بندیوں کا آغاز کر چکی ہیں او ر صوبہ پنجاب میں تقریباً 50 فیصد کام مکمل ہو چکا ہے۔حلقہ بندیوں کی مجوزہ فہرست21اگست2020 ء تک شائع کر دی جائے گی۔ 22 اگست 2020ء سے4 ستمبر 2020 ء تک متعلقہ علاقے کے ووٹر حلقہ بندی کے حوالے سے حاکم مجاز کے پاس اعتراضات جمع کرواسکتے ہیں۔ الیکشن کمیشن کے مقرر کردہ حاکم مجاز 26ستمبر 2020 ء تک ان اعتراضات کے فیصلے کریں گے۔27ستمبر 2020 کو حلقہ بندیوں کی حتمی فہرست شائع کر دی جائے گی۔یاد رہے کہ الیکشن کمیشن نے اعتراضات کی سنوائی کیلئے صوبہ پنجاب میں ریجنل الیکشن کمشنرز پر مشتمل 9حاکم مجازمقرر کئے ہیں۔ علاوہ ازیں حلقہ بندیوں جیسے اہم اور حساس کام کی نگرانی کرنے کیلئے الیکشن کمیشن نے دو ا افسران پر مشتمل 9 مانیٹرنگ ٹیمیں بھی تشکیل دی ہیں جو کہ آغاز سے تکمیل تک کے تمام مراحل کی نگرانی کریں گی اور الیکشن کمیشن کو رپورٹ پیش کریں گی۔

حلقہ بندیاں 

مزید :

صفحہ اول -