چاہتے ہیں آٹا،چینی کی چاروں صوبوں میں قیمتیں یکساں ہوں،شبلی  فراز

 چاہتے ہیں آٹا،چینی کی چاروں صوبوں میں قیمتیں یکساں ہوں،شبلی  فراز

  

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) وفاقی وزیر اطلاعات سینیٹر  شبلی فراز نے کہا ہے کہ شوگر کمیشن رپورٹ کے بعد نرخ بڑھائے گئے، حکومت مافیاز کے دباؤ میں نہیں آئے گی،آٹا اور چینی ہر شخص استعمال کرتا ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ ایسا میکنزم بنایا جائے، جس سے تمام صوبوں میں قیمتیں یکساں ہوں،کرشنگ میں تاخیر کرنے والوں کو روزانہ 50 لاکھ جرمانہ ہوگا، جرمانے کی وجہ سے شوگر کو کنٹرول میں لے آئیں گے، ملک کے چاروں صوبوں میں آٹے کی قیمتیں علیحدہ علیحدہ ہیں۔ آٹے کی سب سے زیادہ قیمت سندھ میں ہے  اس کی وجہ سندھ اپنے حصے کی گندم ریلیز نہیں کر رہی ہے۔ ماضی کی حکومتیں اپنے اور اشرافیہ کے مفاد کو مدنظر رکھ کر پالیسی بناتی تھیں مگر تحریک انصاف کی حکومت غریبوں کے مفاد میں پالیسی بناتی ہے۔، 24اگست کو گندم کا جہاز لنگر انداز ہوگا جس سے ملک میں آٹے کی بڑھتی قیمتوں میں استحکام آئے گا۔ حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ جن اشیاء پر سبسڈی دی جا رہی ہے وہ احساس پروگرام کے ڈیٹا کے ساتھ منسلک کیا جائے تاکہ غریب اس سے فائدہ اٹھا سکیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پی آئی ڈی اسلام آباد میں پریس کانفرنس کے دوران کیا۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ وزیراعظم ہر ماہ ضروری اشیاء کے حوالے سے پرائس کنٹرول کمیٹی کی میٹنگ کرتے ہیں اور جن اشیاء کی قیمتیں زیادہ ہوتی ہیں اس پر فوری ایکشن لیا جاتا ہے۔ چینی کی قمیتوں  کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ شوگر ملز ایسوسی ایشن بڑا طاقتور مافیا ہے۔ جب ہم نے چینی پر رپورٹ کی تو یہ مافیاہائیکورٹچلاگیا۔ عدالت نے ہمارے حق میں فیصلہ دیا۔ ادارے ملک چلاتے ہیں کوئی اکیلا فرد ملک نہیں چلا سکتا۔ ماضی کے حکمرانوں نے اداروں کو مفلوج کر کے رکھ دیاتھا اور اداروں میں اپنے لوگ لگا رکھے تھے جو ان کے جرائم پر پردہ ڈالتے تھے۔ انہوں نے کہا کہ گندم اور چینی کی درآمد سے ملک میں ان کی بڑھتی قیمتوں میں اسحکام آئیگا۔ وزیراعظم نے اس بات کا سختی سے نوٹس لیا کہ جن چیزوں کی قیمتیں بڑھی ہیں انہیں فی الفور کم کیا جا ئے تاکہ غریب عوام کو ریلیف ملے۔ انہوں نے بتایا کہ کے پی کے میں 900سے لے کر 1150روپے، پنجاب میں 860روپے اور سندھ میں 1400سے 1600روپے تک 20کلو کا تھیلا فروخت ہو رہا ہے۔ سندھ حکومت اپنے حصے کی گندم ریلیز نہیں کر رہی جس کی وجہ سے وہاں آٹے کی قیمتیں زیادہ ہیں۔ چاروں صوبوں میں قیمتوں میں استحکام لانے کے لئے گندم درآمد کی ہے اور 24اگست کو گندم کا جہاز کراچی پہنچے گا جس سے قیمتوں میں استحکام آئے گا۔ َ

شبلی فراز

مزید :

صفحہ اول -