ضلع دیر لوئر میں پانچ  ماہ کے بعد پولیو مہم شروع 

 ضلع دیر لوئر میں پانچ  ماہ کے بعد پولیو مہم شروع 

  

تیمرگرہ (بیورورپورٹ) ضلع دیر لوئر میں پانچ ماہ کے بعد پولیو مہم شروع ہوگیا،ڈپٹی کمشنر سعادت حسن اور ڈسٹرکٹ ہیلتھ افیسر ڈاکٹر محمد نذید نے بچوں پولیو کے قطرے پلا کر مہم کا باقاعدہ آغاز کیا،اس سلسلے میں افتتاحی تقریب ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر بلامبٹ میں منعقد ہوئی جس میں ڈپٹی کمشنر سعادت حسن،ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر اشفاق احمد،ڈی ایچ او ڈاکٹر محمد نذیر،ڈپٹی ڈی ایچ او ڈاکٹر ارشادعلی روغانی،پولیو فوکل پرسن زکریا احمد کے علاوہ ڈبلیو ایچ او اور پولیس حکام بھی موجود تھے، اس مو قع پر ڈی سی سعادت حسن،ڈی ایچ او ڈاکٹر محمد نذیر نے پانچ سال سے کم عمر کے بچوں کو پولیو کے قطرے پلاکر ضلع میں پانچ کے بعد پولیو مہم کا آغاز کیا،قبل ازیں ڈپٹی ڈی ایچ او ڈاکٹر ارشاد علی نے بتایا کہ ضلع کے 2لاکھ99ہزار 6سو75بچوں کو پولیو کے قطرے پلائے جائیں گے جس میں ضلع کے تین اٖفغان مہاجرین بھی شامل ہے جس کیلئے ایک ہزار ایک ٹیمیں تشکیل دی گئی ہے جبکہ پولیو ورکرز کی سیکورٹی کی غیر معمولی انتظامات کیے گئے ہیں،تقریب سے ڈپٹی کمشنر سعادت حسن نے کہاکہ ضلع میں پولیو ٹائپ ٹو کے تین کیسز سامنے کے بعد پولیو مہم میں کوئی کوتاہی اور غفلت بر داشت نہیں کی جائے گی اور ڈیوٹی غفلت برتنے والوں اہلکاروں کو نوکری سے برخاست کیا جائیگا، انھوں نے کہاکہ پولیو ٹائپ ٹو خطرناک بیماری ہے جوکہ پولیو وائرس سے زیادہ خطرناک ہے ان کاکہناتھاکہ تمام سٹیک ہولڈرز کی ذمہ داری ہے کہ پولیو مہم کو ہر صورت میں کامیاب بنایا جائے،انھوں نے والدین سے اپیل کی کہ پولیو مہم میں پولیو ورکرز کے ساتھ تعاون کرکے اپنے بچوں کو پولیو کے قطرے پلائے جائیں۔یار دہے کہ کورونا وباء کے باعث ضلع میں پولیو مہم کو غیر معینہ مدت تک ملتوی کیاگیا تھا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -