باپ نے معصوم بیٹی زمین پر پٹخ کرمارڈالی، حادثات میں 5افراد جاں بحق

  باپ نے معصوم بیٹی زمین پر پٹخ کرمارڈالی، حادثات میں 5افراد جاں بحق

  

وہاڑی، سیت پور، کوٹ سبزل، کہروڑ پکا، رحیم یارخان،صادق آباد(بیورو رپورٹ، نامہ نگار، نمائندہ خصوصی، نمائندہ پاکستان)تھانہ سیت پور کی حدود میں قتل کی لرزہ خیز واردات ہوئی ہے۔اغواء کرنے کی کوشش میں باپ نے اپنی ہی دو ماہ کی بچی کو زمین پر پٹخ کر مار ڈالا۔اطلاع ملتے ہی پولیس تھانہ سیت پور موقع پر پہنچ گئی۔تفصیل کے مطابق تھانہ سیت پور کے علاقہ موضع لتی کے رہائشی عاشق حسین رند کی بیٹی پروین بی بی کی شادی 17 سال قبل سلطان پور کے رہائشی نادر(بقیہ نمبر57صفحہ7پر)

 حسین سے ہوئی نادر حسین اپنی بیوی پروین بی بی اور بچوں کے ہمراہ اپنے سسرال موضع لتی میں آیا ہوا تھا کہ کھجوروں کے معاملہ پر نادر حسین اور سسرالیوں کے درمیان جھگڑا ہو گیا تو نادر حسین کے سسرال والوں نے نادر کی بیوی پروین مائی کو خاوند کے ہمراہ جانے روک دیا۔صبح تقریبا 4 بجے نادر حسین پسٹل سے مسلح ہو کر سسرالیوں کے گھر میں داخل ہو گیا اور اپنی ہی 2 ماہ کی بیٹی سنہرا بی بی کو اغواء  کرکے لے جانے لگا جس پر بچی کی والدہ پروین بی بی و دیگر گھر والوں کی اٹھ گئے پیچھے کرنے پر نادر حسین نے اپنی ہی دو ماہ کی معصوم بچی سنہرا بی بی کو زمین پر پٹخ دیا جس سے بچی کی موقع پر ہی موت واقع ہو گئی۔اطلاع ملتے ہی پولیس تھانہ سیت پور موقع پر پہنچ گئی جنہوں نے بچی کی لاش کو تحویل میں لے کر پوسٹمارٹم کے لئے رورل ہیلتھ سنٹر سیت پور پہنچا دیا۔بچی والدہ پروین بی بی اور اہل علاقہ محمد اختر۔صادق حسین۔اظہر حسین۔نذر حسین۔شہزاد۔سیفل۔صفدر حسین۔محمد عابد۔منیر حسین۔حاجی احمد۔شاہینہ بی بی۔پروین بی بی۔نور مائی نسیم مائی۔حسینہ مائی و دیگر شدید احتجاج کرتے ہوئے ملزم کی گرفتاری کا مطالبہ کیا ہے۔ کوٹ سبزل کی نواحی بستی کوٹ جان محمد عباسی کی بدقسمت فیملی بہاولپور سے شادی تقریب سے واپس آ رہے تھے کہ خان پور کے قریب رات کے وقت روڈ پر کھڑی ٹریکٹر ٹرالی سے ٹکرا گئی جس سے کار ڈرائیور انکم ٹیکس آفیسر ذوالفقار علی خان اور اس کی بیوی سدرہ ذوالفقار خان موقع پر جانبحق ہو گئے جبکہ سالہ بچی مہرانساء  اور تین سالہ بیٹا ارحم معجزانہ طور پر بچ گئے ذوالفقار علی خان عباسی تحصیل صادق آباد میں انکم ٹیکس آفیسر تعینات تھا میتیں گھر پہنچنے پر علاقہ کی فضاء  سوگوار ہو گئی ہر آنکھ اشک بار تھی مرحومین کے جنازہ میں لوگوں کی بڑی تعداد میں شرکت کی۔ چور واہ پل کے قریب دو نو ں عمر بچے 16سا لہ ندیم 14سالہ کا شف موٹر سا ئیکل تیز رفتاری سے چلا رہے تھے تیز رفتاری کے باعث موٹر سا ئیکل ان سے کنٹرول نہ ہوا جس پر انہوں نے سا منے سے آ نے وا لے سا ئیکل سوار مجید میں دے مارا جس سے خو فناک دھما کہ ہوا اور مجید زخموں ک تاب نہ لا تے ہو ئے دم توڑ گیاجبکہ موٹر سا ئیکل سوار ندیم اور کا شف شدید زخمی ہو گئے جن کو ریسکیو 1122نے ہسپتال پہنچایا جہاں سے ان کو وکٹوریہ بہا ولپور ریفر کر دیا گیا جہاں ان کی حا لت تشویشناک بتا ئی جا رہی ہے۔ٹریفک حادثے میں شدید زخمی ہونے والا 30 سالہ شخص ہسپتال میں دم توڑ گیا۔ ہسپتال روڈ کا رہائشی 30 سالہ محمد ذوالفقار جو کہ اپنے موٹر سائیکل پر سوار ہو کر جا رہا تھا کہ تیز رفتاری کے باعث سامنے سے آنے والے رکشے سے ٹکرا گیا اور شدید زخمی ہو گیا‘ ورثاء  نے طبی امداد کیلئے شیخ زید ہسپتال منتقل کیا جہاں طبی امداد کے باوجود وہ جانبر نہ ہو پایا اور دم توڑ گیا۔ تھانہ لڈن کے موضع تجوانہ کا محنت کش شاہ محمد کاٹھیا ولد محمد حسین جو تین بچوں کا باپ اور گھر کا واحد کفیل تھا پنکھا چلاتے ہوے بجلی کا  کرنٹ  لگنے سے گر کر بے ہوش ہوگیا بیوی بچوں کے شور شرابہ پر پڑوسیوں نے پہنچ کر ہسپتال لیجانے  کی کوشش کی لیکن وہ جانبر نہ ہوسکا اور جانبحق ہوگیا افسوسناک واقعہ سے گاؤں بھر میں سوگ کی فضاء چھا گئی نماز جنازہ  میں مختلف مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے سینکڑوں افراد نے شرکت کی مرحوم کو سینکڑوں سوگواروں کی موجودگی میں آبائی قبرستان میں سپرد خاک کر دیا گیا۔

حادثہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -