قائداعظم کی پرجوش قیادت کے باعث پاکستان معروض وجود میں آیاد، حبیب الرحمان

قائداعظم کی پرجوش قیادت کے باعث پاکستان معروض وجود میں آیاد، حبیب الرحمان

  

 بہاول پور(بیورورپورٹ) حبیب الرحمان بھٹی نے میڈیاسے گفتگوکرتے ہوئے بتایا کہ  جب پاکستان بنا اس وقت میری عمر تقریباََ 8 سال تھی اور میں بہاول پور کے دیہی علاقہ عباس نگر کے پرائمری سکول میں پڑھتا تھا ہیڈ ماسٹر شاہ صاحب مسلمان تھے۔ہندو مسلم اور دیگر(بقیہ نمبر13صفحہ10پر)

 برادریوں کے طالب علم ساتھ پڑھا کرتے تھے۔ ایک دوسرے کے گھروں میں آنا جانا تھا۔ نواب سر صادق محمد خان عباسی بہت رحم دل تھے وہ ہندو مسلم سب کا خیال رکھتے تھے جب قائداعظم نے پاکستان کی تحریک چلائی تو ہمارے ہیڈ ماسٹر نے ہمارے ہاتھ میں مسلم لیگ کے جھنڈے پکڑا دیئے اور ہمیں بازار میں بھیج دیا۔ ہم گلی کوچوں اور بازاروں میں نعرے لگاتے جاتے اور ہندو دکاندار خاموش رہتے۔ ہمارے نعرے مسلم لیگ زندہ آباد قائداعظم زندہ آباد، پاکستان زندہ آباد اور دو قومی نظریہ زندہ آباد پر مبنی تھے او ر قائداعظم پر جوش اور مخلصانہ کاوشوں کی بدولت پاکستان معرضِ وجود میں آگیا۔ اگر دیکھا جائے تو پاکستان بنانے میں ہمارا بھی حصہ ہے۔ان خیالات اظہار بہاول پور کے معروف تاجر اور بھٹی مارکیٹ یونیورسٹی چوک کے صدر حبیب الرحمن بھٹی نے جشنِ آزادی کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ وہ اس وقت عباس نگر کی پوری برادری اور بھٹی فیملی میں سب سے بڑے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستان بننے کے بعد نواب سر صادق محمد خان عباسی نے اعلان کیا کہ جنہوں نے جانا ہے وہ بلاخوف و خطر جا سکتے ہیں۔ بعد ازاں نواب صاحب کی فوج ہندوؤں کو منچن آباد بارڈر تک با حفاظت چھوڑ کر آئی۔انہوں نے بتایا کہ جب ہم صبح اُٹھے تو ہندؤوں کے گھر خالی تھے  ور کوئی جھگڑا یا خون خرابہ نہیں ہواہندو اپنی مرضی سے با حفاظت یہاں سے گئے لیکن وہاں سے آنے والوں کے ساتھ کم عقل لوگوں نے جو ظالمانہ سلوک کیا وہ سب کے سامنے ہے۔

پاکستان

مزید :

ملتان صفحہ آخر -