وزیراعظم کا تعمیراتی اور ہاؤسنگ سیکٹر کے لئے مراعاتی پیکج، ایف بی آرنے بلڈرز اور ڈویلیپرز کو خوشخبری سنا دی

وزیراعظم کا تعمیراتی اور ہاؤسنگ سیکٹر کے لئے مراعاتی پیکج، ایف بی آرنے بلڈرز ...
وزیراعظم کا تعمیراتی اور ہاؤسنگ سیکٹر کے لئے مراعاتی پیکج، ایف بی آرنے بلڈرز اور ڈویلیپرز کو خوشخبری سنا دی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن )فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر)نے کہا ہے کہ بلڈرز اور ڈویلیپرز کا تعمیراتی صنعت کو دیئے گئے پیکج سے فائدہ اٹھانے کا رحجان معیشت کے استحکام کی  ضامن ہے،ایف بی آر سکیم سے فائدہ اٹھانے والے بلڈرز، ڈویلپرز،پلاٹس اور ہاؤسنگ یونٹس کے خریداوروں سے آمدنی کے ذرائع نہیں پوچھے گا۔

فیڈر ل بورڈ آف ریوینیو نے تعمیراتی صنعت کو دی گئی ٹیکس مراعات و سہولیات اور بلڈرز اور ڈویلپرز کا سکیم کی طرف بڑھتے ہوئے رحجان کے حوالے پر اعلامیہ جاری کیا ہے اور کہا  ہے کہ چالیس پراجیکٹس اب تک ایف بی آرکے سسٹم میں رجسٹرڈ ہو چکے ہیں جبکہ 4812 پراجیکٹس نے آئرس میں رجسٹرز ہونے کے لئے ڈرافٹس تیار کر لئے ہیں،ایک خریدار نے اپنی ڈیکلیریشن ایف بی آر کو جمع کرا دی ہے اور297 خریداروں نے آئرس سسٹم میں اپنی ڈیکلیریشنز تیار کر لی ہیں۔ کاروباری طبقہ کی طرف سے مراعاتی پیکج پر بہت اچھا رحجان دیکھنے میں آیا ہے جو کہ کاروباری طبقہ کا وزیراعظم کے تعمیراتی صنعت اور ہاوسنگ سیکٹر کے ویثرن پر اعتماد کا اظہار ہے،وزیراعظم کا تعمیراتی اور ہاؤسنگ سیکٹر کے لئے مراعاتی پیکج ملکی معیشت کے استحکام کی طرف سنگ میل ثابت ہو گا،وفاقی حکومت نے بلڈرز اور ڈویلپرز جو کہ فکسڈ ٹیکس نظام سے مستفید ہونا چاہتے ہیں کے لیے بہت سے اقدامات اٹھائے ہیں۔

جاری اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ حکومت کی ٹیکس میں چھوٹ سکیم بلڈرز و ڈویلپرز اور لوگوں کے لئے ایک بہت پرکشش پیکج ہے،شرائط کو پورا کرنے کےبعدایف بی آر سکیم سے فائدہ اٹھانے والے بلڈرز، ڈویلپرز اور پلاٹس اور ہاوسنگ یونٹس کے خریداوروں سے آمدنی کے ذرائع نہیں پوچھے گا،مزید یہ کہ ایسے بلڈرز اور ڈویلپرز جو اس سکیم کو اپناتے ہیں وہ انکم ٹیکس آرڈینینس  2001کے تحت فکسڈ ٹیکس کے نفاذ سے فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔ایف بی آر نےاس سلسلے میں مئی میں آن لائن پراجیکٹ رجسٹریشن نظام کو متعارف کرایا تھاتاکہ ٹیکس گزاروں کو زیادہ سے زیادہ سہولیات دی جا سکیں مزید برآں اس مراعاتی پیکج سے متعلق ایک ویب پیج بھی بنایا گیا ہے اور بلڈرز اور ڈویلیپرز کی راہ نمائی کے لیے ویڈیو ٹیو ٹوریل  بھی اپلوڈ کیا گیا  ہے،اس کے علاوہ بلڈرز اور ڈویلیپرز کی ایف بی آر ہیڈکوارٹر کے پالیسی ونگ سے براہ راست رسائی کو ممکن بنانے کے لئے ایک ای میل ایڈریس بھی فراہم کیا گیا ہے اور پیکج سے متعلقہ ہر قسم کے سوالات کا جامع انداز میں جواب بھی اپلوڈ کیا گیا ہے۔ بلڈرز اور ڈویلیپرزاور ٹیکس گزاروں میں آگاہی پیدا کرنے اور ان کی سہولت کے لئے اشتہاری مہم بھی چلائی گئی۔

سہولیات کو مزید بڑھاتے ہوئے ایف بی آر نے جولائی 2020 میں آن لائن کانفرس کا انعقاد بھی کیا جس میں 500 شرکا نے شرکت کی۔ ایف بی آر کی طرف سے چیئرمین ایف بی آر جبکہ نیا پاکستان ہاوسنگ ترقیاتی ادارے کی طرف سے ڈپٹی چیئرمین نیا پاکستان ہا وسنگ ترقیاتی ادارے نے شرکت کی۔اس آن لائن سیشن میں ایف بی آر کے نمائندگان نے پیکج کے متعلق تفصیلی بریفنگ دی اور رجسٹریشن کے مرحلے کو آسانی سے مکمل کرنے پر راہ نمائی دی، آخر میں تفصیلی سوالات و جوابات کا سیشن بھی رکھا گیا تا کہ پیکج سے متعلق ہر قسم کے ابہام کو دور کیا جا سکے۔

مزید :

رئیل سٹیٹ -