انسٹاگرام کو 500 ارب ڈالر کے مقدمے کا سامنا، انتہائی سنگین الزام لگ گیا

انسٹاگرام کو 500 ارب ڈالر کے مقدمے کا سامنا، انتہائی سنگین الزام لگ گیا
انسٹاگرام کو 500 ارب ڈالر کے مقدمے کا سامنا، انتہائی سنگین الزام لگ گیا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) سوشل میڈیا پلیٹ فارم انسٹاگرام کے خلاف لوگوں کا بائیومیٹرک ڈیٹا غیرقانونی طور پر محفوظ کرنے کے الزام میں 500ارب ڈالر ہرجانے کا مقدمہ دائر کر دیا گیا۔ میل آن لائن کے مطابق انسٹاگرام کے خلاف یہ ’کلاس ایکشن لاءسوٹ‘ (Class-action lawsuit)امریکی ریاست کیلیفورنیا کے شہر ریڈووڈ سٹی کی سٹیٹ کورٹ میں دائر کیا گیا ہے۔

مقدمے میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ فیس بک کا ذیلی سوشل میڈیا پلیٹ فارم انسٹاگرام اپنے ایک ’فوٹو ٹیگنگ ٹول‘ (Photo-tagging tool)کے ذریعے لوگوں کے چہروں کی شناخت کا ڈیٹا غیرقانونی طور پر سٹور کر رہا ہے۔ اس مقدمے پر فیس بک کی ترجمان سٹیفنی اوٹوے کی طرف سے موقف سامنے آیا ہے جس میں اس الزام کو بے بنیاد اور جھوٹ قرار دیا گیا ہے۔ سٹیفنی اوٹوے کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ” انسٹاگرام ’فیس ریکگنیشن سروسز‘ (Face recognition services) استعمال ہی نہیں کرتا۔ انسٹاگرام کی بجائے فیس بک یہ ٹیکنالوجی استعمال کرتا ہے۔ چنانچہ انسٹاگرام کی طرف سے اس ٹیکنالوجی کا غیرقانونی استعمال کرنے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔“واضح رہے کہ گزشہ ماہ کمپنی نے اسی نوعیت کے ایک مقدمے میں سیٹلمنٹ کے لیے 65کروڑ ڈالر ادا کرنے کی پیشکش کی تھی۔ اس مقدمے میں بھی کمپنی پر لوگوں کا بائیومیٹرک ڈیٹا غیرقانونی طور پر محفوظ کرنے کا الزام عائد کیا گیا تھا۔

مزید :

سائنس اور ٹیکنالوجی -