طیارہ حادثہ، پائلٹ بال بال بچ گیا لیکن قد چھوٹا ہوگیا

طیارہ حادثہ، پائلٹ بال بال بچ گیا لیکن قد چھوٹا ہوگیا
طیارہ حادثہ، پائلٹ بال بال بچ گیا لیکن قد چھوٹا ہوگیا

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ میں چند ہفتے قبل ایک چھوٹا طیارہ حادثے کا شکار ہو گیا اور 210کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے ایک درخت سے جا ٹکرایا۔ طیارے میں موجود دونوں پائلٹ اس خوفناک حادثے میں خوش قسمتی سے زندہ بچ گئے تاہم ایک پائلٹ کے ساتھ ایسا کام ہو گیا کہ سن کر یقین کرنا مشکل ہو جائے۔ میل آن لائن کے مطابق اس پائلٹ کا نام ڈیو انوین ہے جو 1951ءکے اس پرانے ’ہاکر سی فیوری طیارے کا پائلٹ تھا۔ اس کے ساتھ معاون پائلٹ ایسکل ایمڈل تھا۔ 

دونوں پائلٹ 5ہزار فٹ کی بلندی پراس طیارے کے ساتھ لوپس مختلف کرتب دکھا رہے تھے کہ اس کا انجن ناکارہ ہو گیا اور طیارہ زمین پر گرنا شروع ہو گیا۔ طیارے کا کنٹرول ایمڈل نے سنبھال لیا جبکہ ڈیو لینڈنگ کے لیے جگہ تلاش کرنے لگا۔ طیارے کا لینڈنگ گیئر بھی ناکارہ ہو چکا تھا چنانچہ طیارہ 210کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے زمین کی طرف گرتا ہوا ایک درخت سے آ ٹکرایا۔ اس حادثے میں معجزانہ طور پر دونوں پائلٹس کو کوئی بڑا زخم بھی نہیں آیا۔ تاہم 59سالہ ڈیو انوین کا کہنا ہے کہ اس حادثے کی وجہ سے اس کا قد ایک انچ کم ہو گیا ہے۔ ڈیو کا کہنا تھا کہ ”میں گزشتہ 35سال سے جہاز اڑا رہا ہوں اور اپنی تجربے کی بنیاد پر کہتا ہوں کہ جتنا خوفناک یہ حادثہ تھا، ہم دونوں کے زندہ بچنے کے امکانات صفر تھے۔ تاہم ہم معجزانہ طور پر زندہ تو رہے مگر میرا قدایک انچ کم ہو گیا ہے۔ میری ایک پسلی ٹوٹ گئی تھی اور ریڑھ کی ہڈی کچھ فریکچر ہوئی جس کی وجہ سے میرا قد کم ہو گیا۔“

مزید :

ڈیلی بائیٹس -