راولپنڈی میں ایک وفاقی وزیر کی طرف سے غیرقانونی کال سنٹر چلائے جانے کاا نکشاف

راولپنڈی میں ایک وفاقی وزیر کی طرف سے غیرقانونی کال سنٹر چلائے جانے کاا نکشاف
راولپنڈی میں ایک وفاقی وزیر کی طرف سے غیرقانونی کال سنٹر چلائے جانے کاا نکشاف

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) راولپنڈی کے نواحی علاقے بارہ کہومیں ایک وفاقی وزیرکی طرف سے غیرقانونی طورپر کال سنٹرچلائے جانے کا انکشاف ہواہے جس سے قومی خزانے کو اربوں روپے کا نقصان ہو رہا ہے تاہم وزیرکانام معلوم نہیں ہوسکا۔دنیا نیوز کے پروگرام’ دنیا ایٹ ایٹ ود مالک‘ میں ٹیلی کام سیکٹر میں اربوں روپے کے ایک سکینڈل کا انکشاف ہوا ہے اورپروگرام کے میزبان محمد مالک نے بتایا کہ راولپنڈی کے علاقے بارہ کہو میں ایک وفاقی وزیر غیر قانونی کال سینٹر چلا رہے ہیں ۔ پی ٹی اے کے چیئرمین سید اسماعیل شاہ کا کہنا تھا کہ حکومت 31 دسمبر کو آئی سی ایچ پالیسی پر نظر ثانی کرے گی ۔محمد مالک نے بتایا کہ پی ٹی اے اس قدر کمزور ادارہ ہے کہ وہ اس سیکٹر میں کام کرنے والی کمپنیوں کو قواعد و ضوابط کا پابند نہیں بنا پا رہا۔ ٹیلی کام سیکٹر کے سلمان انصاری کا موقف تھا کہ سابق حکومت نے انٹرنیشنل کلیئرنگ ہاو¿س قائم کر کے ٹیلی کام سیکٹر کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا، سعودی عرب کے ساتھ پاکستان کا ٹیلی کام پروٹوکول نہ ہونا بھی حیرت ناک ہے۔

مزید :

راولپنڈی -اہم خبریں -