حقوق اہلسنت محاذ کے زیر اہتمام یوم فیض گنج بخشؒ منایا گیا

حقوق اہلسنت محاذ کے زیر اہتمام یوم فیض گنج بخشؒ منایا گیا

لاہور(سٹاف رپورٹر) حضرت داتا گنج بخش علی ہجویریؒ کے 971 ویں سالانہ عرس کے موقع پر حقوق اہلسنت محاذ کے زیر اہتمام ملک بھر میں یوم فیض گنج بخش ؒ منایا گیا نماز فجر کے بعد داتا گنج بخش علی ہجویریؒ کے ایصال ثواب کے لئے اہلسنت کی ملک بھر کی مساجد اور مدارس میں قرآن خوانی کی گئی اور فیض گنج بخش سیمینارز منعقد کئے گئے جبکہ علماء نے جمعہ کے اجتماعات میں فیض گنج بخش ؒ کے موضوع پر خطابات کئے حقوق اہلسنت محاذ کے مرکزی امیر پیر سید شاہد حسین گردیزی، مولانا پیر احمد شکیل قادری، علامہ سید مصطفی رضوی، مفتی احمد حسین نقشبندی، مولانا سید اقبال حسین شاہ، مولانا محمد یونس نورانی، علامہ محمد اشرف، مفتی دلنواز علوی، مولانا صدام حسین، علامہ مبارک علی رضوی اور دیگر نے مختلف مقامات پر گنج بخش سیمینارز سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حضرت داتا گنج بخش علی ہجویریؒ کی برصغیر میں اسلام کی اشاعت تبلیغ اور خدمت کسی تعارف کی محتاج نہیں آپ کی تعلیمات وتصانیف اور ان کا مزار مخلوق خدا کے لئے بہت بڑا ہدایت کا ذریعہ ہے انہوں نے کہا کہ حضرت داتا گنج بخش علی ہجویریؒ ظاہری اور باطنی علوم میں اپنے وقت کے امام تھے جس کا اندازہ ان کی مشہور کتاب کشف المعجوف سے لگایا جاسکتا ہے داتا گنج بخش علی ہجویری ؒ نے جہاں اپنی تعلیمات کے ذریعے اسلام کی شمع روشن کی وہاں گراں قادر کتب بھی تصنیف کیں جن میں آپ کی شہرہ آفاق تصنیف کشف المعجوف فارسی زبان میں تصوف پر لکھی جانے والی سب سے پہلی کتاب ہے جو کاملین کے لئے رہنما اور عوام کے لئے پیر کامل کا درجہ رکھتی ہے آپؒ نے برصغیر میں اسلام کی شمع روشن کی،علماء نے حکمرانوں سے یہ بھی مطالبہ کیا کہ فرقہ واریت پھیلانے والے افراد کا محاسبہ کیا جائے اور ایسا لٹریچر جو فرقہ واریت کو پروان چڑھانے اور بلخصوص مزارات اولیاء جو انوار تجلیات کے مراکز ہیں ان کے بارے میں غلط پراپیگنڈا کا باعث ہے جس کو پڑھ کر نہ پختہ ذہن غلط راستوں کا انتخاب کرتے ہیں۔ ایسے ہر قسم کے لٹریچر پر پابندی لگائی جائے اور ایسے لٹریچر کے مصنفین اور پبلیشرز کے خلاف بھی حسب ضابطہ کاروائی کی جائے۔ داتا گنج بخش علی ہجویری ؒ کی شہرہ آفاق کشف المعجوف کو نصاب تعلیم میں شامل کیا جائے

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...