انتخابی دھاندلی میں افتخار چودھری نگراں حکومتوں ،مسلم لیگ (ن)کا بڑا کردار ہے ،مشرف

انتخابی دھاندلی میں افتخار چودھری نگراں حکومتوں ،مسلم لیگ (ن)کا بڑا کردار ہے ...

                         کراچی(آئی این پی )سابق صدر پرویز مشرف نے کہا ہے کہ عام انتخابات 2013 کی دھاندلی میں افتخار چوہدری، نگراں حکومتوں،مسلم لیگ(ن) کا بڑا کردار ہے ،عمران خان کی اس سے متعلق تمام باتیں درست ہیں ، افتخار چوہدری کا (ن) لیگ سے گٹھ جوڑ تھا اوروہ پس پردہ ان کی حمایت کرتے تھے جو اب تک جاری ہیں۔ گزشتہ روز اپنے ایک انٹرویو میں پرویز مشرف نے کہا کہ جب ملک میں انصاف کی عدم فراہمی ہو اور لوگ اپنے جائز مطالبات کے لیے کہیں نہ جاسکیں تو دھرنے ہی ہوتے ہیں،(ن) لیگ کی اکثریت صرف اسمبلی میں ہے لیکن حقیقی طور پر عوام ان کے ساتھ نہیں بلکہ ان کے خلاف ہیں جس سے دھاندلی والی باتوں میں بھی کچھ حد تک حقائق نظر آتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دھرنوں سے متعلق اسکرپٹ پر کچھ نہیں کہہ سکتا لیکن پاکستان میں جس طرح کا ماحول چل رہاہے وہ معمولی نہیں ہے، ملک میں کسی ایک کے لیے نہیں بلکہ پاکستان کے لیے اسکرپٹ ہونا چاہئے۔پرویز مشرف نے کہا کہ عوام نوازشریف کی حکومت کو یکسر مسترد کرچکے ہیں، ملک میں تبدیلی کی اشد ضرورت ہے اور عمران خان بھی وہی مانگ رہے ہیں جس کے حق میں ہوں لیکن میرے نزدیک ملک میں حکومت کے بجائے ماحول تبدیل ہونا چاہئے کیونکہ یہاں جو بھی اسمبلی میں آتا ہے وہ کرپشن کرتا ہے، ملک میں 58 ٹو بی کی اشد ضرورت ہے جس کے اختیارات صدر کے پاس ہونے چاہئیں۔ ملک میں احتساب ہونا چاہئے کیونکہ پاکستان کو لوٹ لیا گیا ہے، میں نے بیرون ملک سے پاکستان کا پیسہ واپس لانے کے لیے اقوام متحدہ کی سطح پر کوششیں کیں اور کوفی عنان سے بھی بات کی تھی کہ اس کے لیے کوئی قانون بنایا جائے کیونکہ اس میں کوئی شک نہیں کہ پاکستان کے اربوں ڈالر باہر پڑے ہیں جنہیں واپس لانے کے لیے کوئی قانون ہونا چاہئے۔پرویز مشرف نے کہا کہ 2008 کے الیکشن 100 فیصد بہتر تھے لیکن اس بار الیکشن بالکل صحیح نہیں ہوئے کیونکہ جب نگراں حکومت ہی دھاندلی کرانا چاہے تو الیکشن کبھی ٹھیک نہیں ہوسکتے۔ انہوں نے کہا کہ میرے کیس میں بھی زیادتی کی گئی ہے، نوازشریف نے میرے ساتھ زیادتی کی اور کررہے ہیں جسے وہ خود بھگتیں گے جبکہ افتخار چوہدری بحیثیت چیف جسٹس مسائل کھڑے کرتے تھے وہ وزیراعلیٰ، چیف سیکریٹری سمیت افسران سے چھوٹے چھوٹے مطالبات کرتے تھے جن میں گاڑی کی تبدیلی کی بھی باتیں ہوتی تھیں۔ 99 میں جو کچھ ہوا میں نے خود نہیں کیا بلکہ ان لوگوں نے وہ سب کرنے پر مجھے مجبور کیا تھا کیونکہ شریف برداران خود ہی اپنے آپ کو مصیبت میں ڈالتے ہیں اور یہ لوگ اب بھی اس طرح کے واقعہ ہونے کی حرکتیں کررہے ہیں۔

مزید : صفحہ اول


loading...