15دسمبر کے احتجاج میں قانون کی خلاف ورزی پر سخت ایکشن لیا جائے

15دسمبر کے احتجاج میں قانون کی خلاف ورزی پر سخت ایکشن لیا جائے

                                 لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہور ہائیکورٹ کے فل بنچ نے سی سی پی او لاہور کو حکم دیا ہے کہ 15دسمبر کو لاہور بند کرنے کے حوالے سے تاجروں، عوام الناس ، تحریک انصاف سمیت تمام متعلقہ سٹیک ہولڈرز کی مشاورت سے سکیورٹی پلان مرتب کیا جائے اور خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف قانون کے مطابق سخت کارروائی کی جائے۔ مسٹر جسٹس خالد محمود خان، مسٹر جسٹس شاہد حمید ڈار اور مسٹر جسٹس انوار الحق پر مشتمل فل بنچ نے تاجر رہنما نعیم میر کی درخواست کی سماعت کے دوران فل بنچ نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ بدقسمتی سے حکومت اپنی رٹ قائم کرنے میں مکمل ناکام ہو چکی ہے ، آئین اور قانون پر اس کی روح کے مطابق عملدرآمد کرایا جانا چاہیے۔درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ 15دسمبر کو تحریک انصاف نے لاہور بند کر نے کا اعلان کیا ہے اور فیصل آباد واقعہ سے لگتا ہے کہ لاہور میں بھی حالات خراب ہونگے ، سی سی پی او لاہور امین وینس نے فل بنچ کو بتایا کہ انہوں نے شہر کے 90فیصد تاجروں سے 15دسمبر سے متعلق مشاورت کر لی گئی ہے، فل بنچ نے سی سی پی او کو حکم دیا کہ آج 13دسمبر کو تاجروں، عوام ، تحریک انصاف اور دیگر سٹیک ہولڈروں سے مشاورت کر کے 15دسمبر سے متعلق جامع سکیورٹی پلان مرتب کیا جائے اور جو کوئی بھی قانون کی خلاف ورزی کرے اس کے خلاف سخت ایکشن لیا جائے، فل بنچ نے پنجاب حکومت کو بھی حکم دیا ہے کہ سی سی پی او لاہور کی معاونت کی جائے اور سی سی پی او کی تاجروں، عوام اور دیگر سٹیک ہولڈرز کے ساتھ میٹنگ بارے میڈیا کے ذریعے تشہیر کی جائے تا کہ ہر کسی کو اس میٹنگ کا وقت اور جگہ کا علم ہو سکے، فل بنچ نے درخواست پر مزید کارروائی 15دسمبر تک ملتوی کر دی ۔

مزید : صفحہ اول


loading...