سپریم کورٹ کا سابق رجسٹرار کے خلاف قانونی چارہ جوئی سے انکار

سپریم کورٹ کا سابق رجسٹرار کے خلاف قانونی چارہ جوئی سے انکار

 اسلام آباد (آن لائن)سپریم کورٹ نے سابق رجسٹرار ڈاکٹر فقیر حسین کے خلاف کسی قسم کی قانونی چارہ جوئی سے انکار کر دیا۔چیمبر میں اپیل کی سماعت کے دوران جسٹس آصف سعید کھوسہ نے قرار دیا کہ رجسٹرار ریٹائر ہو چکا ہے لہذا قواعد کی خلاف ورزی پر اس کے خلاف تادیبی کارروائی ممکن نہیں ہے۔یاد رہے کہ ڈاکٹر فقیر حسین ان دنوں فیڈرل جوڈیشل اکیڈمی کے ڈائریکٹر جنرل کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہے ہیں ان کے خلاف آئینی درخواست فروری2013 میں دائر ہوئی جس میں کہاگیا ہے کہ جسٹس ناصر الملک کی سربراہی میں فل بنچ نے میاں شہباز شریف کی دوہری رکنیت کے خلاف مقدمے کی سماعت کے لئے بڑا بنچ بنانے کی درخواست چیف جسٹس کو بھجوانے کا حکم دیا لیکن ڈاکٹر فقیرحسین نے اس حکم پر عملدرآمد سے گریز کیا۔مذکورہ بنچ تشکیل نہیں دیا تو بھی اس نے رجسٹرار کے خلاف فوجداری درخواست نہیں دی اب مطلوبہ بنچ خود جسٹس ناصر الملک کو تشکیل دینا ہے جسٹس کھوسہ نے درخواست گزار سے استفسار کیا کہ شہباز شریف کے خلاف مقدمے کا فیصلہ ابھی تک نہیں ہوا

مزید : صفحہ اول


loading...