کڈنی اینڈ لیور ٹرانسپلانٹ انسٹیٹیوٹ میں 750بستروں کا ہسپتال بنے گا ،شہباز شریف

کڈنی اینڈ لیور ٹرانسپلانٹ انسٹیٹیوٹ میں 750بستروں کا ہسپتال بنے گا ،شہباز ...

                    لاہور(پ ر) وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف سے پنجاب کڈنی اینڈ لیورٹرانسپلانٹ انسٹیٹیوٹ اینڈ ریسرچ سینٹر کے بورڈ آف گورنرز نے صدر ڈاکٹر سعید اختر کی سربراہی میں ملاقات کی جس میں پنجاب کڈنی اینڈ لیور ٹرانسپلانٹ انسٹی ٹیوٹ اینڈ ریسرچ سینٹر کے منصوبے پر تفصیلی بات چیت ہوئی اور انسٹیٹیوٹ کی تعمیر کے منصوبے پر فوری اور تیزرفتاری کے ساتھ کام کرنے پر اتفاق کیا گیا۔ وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے بورڈ آف گورنرز سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کا پہلا کڈنی اینڈ لیورٹرانسپلانٹ انسٹی ٹیوٹ اینڈ ریسرچ سینٹر لاہور میں بنایا جائے گا اور انسٹیٹیوٹ کی تعمیر کے لئے معاہدہ طے پا گیا ہے۔ پنجاب حکومت نے انسٹیٹیوٹ کے لئے نالج پارک میں 50ایکڑ اراضی مختص کی ہے۔ انسٹی ٹیوٹ کی تعمیراور دیگر سہولتوں کی فراہمی کے لئے پنجاب حکومت 13 ارب روپے کی خطیررقم فراہم کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ ہسپتال 750بستروں پر مشتمل ہو گا۔ میڈیکل کالج‘ نرسنگ کالج کے علاوہ میڈیکل یونیورسٹی بھی قائم کی جائے گی۔ پنجاب کڈنی اینڈ لیور ٹرانسپلانٹ انسٹی ٹیوٹ اینڈ ریسرچ سینٹر کے لئے آزاد اور خود مختار بورڈ آف گورنرز تشکیل دیا گیا ہے جو مالی اور انتظامی لحاظ سے خودمختار ہو گا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ سٹیٹ آف دی آرٹ پنجاب کڈنی اینڈ لیورٹرانسپلانٹ انسٹی ٹیوٹ اینڈ ریسرچ سینٹر میں غریب اور مستحق مریضوں کا علاج مفت ہو گا۔ منصوبہ جلد سے جلد مکمل کرنے کے لئے قومی جذبے‘ محنت اور تیزرفتاری کے ساتھ کام کرنے کی ضرورت ہے۔ پنجاب حکومت اس منصوبے کی جلد تکمیل کے لئے ہر قسم کی معاونت جاری رکھے گی۔ اس موقع پر انسٹیٹیوٹ کے بورڈ آف گورنرز کے صدر ڈاکٹر سعید اختر نے کہا کہ وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف کے ویژن کے مطابق منصوبے پر محنت‘ شفافیت اور تیزرفتاری سے کام کریں گے اور منصوبے کو جلد سے جلد پایہ تکمیل تک پہنچائیں گے۔ مشیربرائے صحت خواجہ سلمان رفیق‘ پارلیمانی سیکرٹری برائے صحت خواجہ عمران نذیر‘ ایم پی اے نادیہ عزیز‘ چیف سیکرٹری‘ سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو‘ چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیات‘ سیکرٹری ہائیرایجوکیشن‘ متعلقہ حکام اور پنجاب کڈنی اینڈ لیور انسٹی ٹیوٹ بورڈ آف گورنرز کے صدر ڈاکٹر سعید اختر اور دیگر عہدیدران بھی اس موقع پر موجود تھے۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا ہے کہ وزیراعظم محمد نوازشریف کی قیادت میں پاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے بجلی کی قیمتوں میں نمایاں کمی کر کے عوام دوستی کا ثبوت دیا ہے۔ ایک ماہ میں دوبار پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں اور اب بجلی کی قیمتوں میں کمی کر کے عوام کے دل جیت لئے ہیں۔ بجلی کی قیمتوں میں کمی کا اعلان عوام کے لئے تحفہ ہے۔ عوام کو ریلیف کی فراہمی پاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت کا اولین ایجنڈا ہے اور عوام کی فلاح و بہبود کے لئے آئندہ بھی اقدامات کا سلسلہ جاری رہے گا۔ان خیالات کا اظہار وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے یہاں مختلف اضلاع سے تعلق رکھنے والے اراکین اسمبلی سے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ منتخب نمائندوں نے اپنے علاقوں میں جاری ترقیاتی سکیموں اور فلاحی پروگراموں پر پیش رفت سے آگاہ کیا۔وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے اراکین اسمبلی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ عوام کی خدمت پاکستان مسلم لیگ (ن) کامشن ہے۔ عوام کو ریلیف کی فراہمی کے منصوبوں پر اربوں روپے کے وسائل خرچ کئے جا رہے ہیں۔ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی سے عوام کو حقیقی معنوں میں ریلیف ملا ہے اور اب بجلی کی قیمتوں میں نمایاں کمی سے بھی عوام کو فائدہ پہنچے گا۔ انہوں نے کہا کہ انتشار کی حالیہ سیاست سے پاکستان کی معیشت کو نقصان پہنچا ہے۔ بے مقصد احتجاجی سیاست پر پوری قوم دکھی ہے اور سیاستدانوں سے بہتری کی توقع رکھتی ہے۔ اتحاد اور ایثار وقت کی اہم ترین ضرورت ہے۔ پاکستان کو آگے لے جانے کے لئے ”ہم“ کی روش اپنانا ہو گی۔ ”میں“ کے رویے نے ملک کا بے پناہ نقصان کیا ہے۔ ذاتی انا اور جماعتی مفادات کی قربانی دے کر پاکستان کی ترقی اور عوام کی خوشحالی کے لئے کام کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ انتشار کی سیاست کرنے والے جان لیں کہ مسلم لیگ (ن) کا جینا مرنا عوام کے ساتھ ہے۔ پاکستانی قوم کی ترقی اور خوشحالی کی راہ میں کسی کو رخنہ ڈالنے کی اجازت نہیں دے گی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کے 18 کروڑ عوام ملک کو پھلتا پھولتا دیکھنا چاہتے ہیں اور وہ احتجاجی اور منفی سیاست کے ذریعے بیرونی دنیا میں ملک کی ساکھ کو خراب کرنے والوں اور ملک کو معاشی طور پر نقصان پہنچانے والوں کو کسی طور پر معاف نہیں کریں گے۔ پاکستان کی عوام نے مسلم لیگ (ن) کو عوامی خدمت کا مینڈیٹ دیا ہے۔ ان کے اعتبار پر پورا اتریں گے اور عوام کو ریلیف کی فراہمی کے لئے اقدامات کرتے رہیں گے۔

مزید : صفحہ اول


loading...