شوہر نے بھاری بھرکم بیگم سے ایک بات ایسی کہہ دی کہ اسے تو چھوڑا ہی، خاتون نے 63 کلووزن بھی کم کرڈالا، ایسا کیا کہا تھا؟ جان کر آپ بھی احتیاط کریں گے

شوہر نے بھاری بھرکم بیگم سے ایک بات ایسی کہہ دی کہ اسے تو چھوڑا ہی، خاتون نے 63 ...
شوہر نے بھاری بھرکم بیگم سے ایک بات ایسی کہہ دی کہ اسے تو چھوڑا ہی، خاتون نے 63 کلووزن بھی کم کرڈالا، ایسا کیا کہا تھا؟ جان کر آپ بھی احتیاط کریں گے

  

لندن (نیوز ڈیسک) موٹاپے سے نجات پانا کوئی آسان کام نہیں لیکن ایک برطانوی خاتون کے لئے یہ کام اس کے بدمزاج خاوند کی بے حسی نے انتہائی آسان کر دیا۔ جریدے ڈیلی میل کے مطابق نوٹنگم شائر سے تعلق رکھنے والی 35 سالہ جین آلٹ کا وزن ایک وقت پر 140 کلو گرام تک پہنچ گیا تھا اور اس کا ظالم خاوند ناصرف اس کا مذاق اڑاتا تھا اور اسے بیڈ پر اپنے ساتھ سونے نہیں دیتا تھا، بلکہ صوفے پر رات گزارنے کو کہتا تھا۔

جین کا کہنا ہے کہ جب اس نے وزن میں کمی کی کوشش شروع کی تو اس کے خاوند نے اس کا ساتھ دینے کی بجائے ایک انتہائی تکلیف دہ بات کہہ ڈالی۔ شوہر نے مذاق اڑاتے ہوئے جین سے کہا، ”تمھارا وزن کم نہیں ہو رہا، شاید صرف ٹخنوں سے کچھ وزن کم ہوا ہے، موٹی گائے۔“ جین کہتی ہیں کہ یہ زہر آلود بات سن کرانہوں نے فیصلہ کرلیا کہ وہ سب سے پہلے اپنے بے حس خاوند سے نجات حاصل کریں گی اور اس کے بعد موٹاپے کو بھی اپنی زندگی سے نکال باہر کریں گی۔

اپنے خاوند اینڈی کے ساتھ گزرے وقت کے بارے میں جین نے بتایا کہ وہ انہیں شرمندہ کرنے کا موقع کبھی بھی ہاتھ سے جانے نہ دیتا تھا۔ ایک دفعہ وہ ہاتھ پر گھڑی پہننے کی کوشش کررہی تھیں تو اینڈی کہنے لگا کہ اپنی موٹی کلائیوں پر ذرا احتیاط کے ساتھ اسے باندھنا کہیں گھڑی ٹوٹ ہی نہ جائے۔ وہ کہتی ہیں کہ خاوند ہی اصل میں ان کے بے پناہ موٹاپے کی وجہ بنا تھا کیونکہ جب وہ انہیں رنج پہنچاتا تو وہ زہنی سکون حاصل کرنے کے لئے کھانے کی شکل میں سہارا ڈھونڈتی تھیں۔

جب انہوں نے تکلیف اور ذہنی کرب کا باعث بننے والے خاوند کو اپنی زندگی سے نکال باہر کیا تو خوراک میں سہارا تلاش کرنے کی عادت بھی خود بخود ختم ہوگئی۔ اب نہ کوئی ان پر ذہنی تشدد کرنے والا تھا اور نہ ہی اضافی خورا ک کو سہارے کے طور پر استعمال کرنے کی ضرورت تھی۔

جین کہتی ہیں کہ ان کی زیادہ کھانے کی ضرورت خود بخود کم ہونا شروع ہوگئی اور چند ماہ کے دوران انہوں نے تقریباً 63 کلو گرام وزن کم کرلیا۔ وہ کئی ماہ سے ناشتے میں صرف دہی اور پھل کھاتی ہیں، دوپہر کے وقت سبزیاں اور تھوڑا سا پنیر کھاتی ہیں، جبکہ رات کے وقت بھی بھنی ہوئی سبزیاں کھاتی ہیں۔ وہ کہتی ہیں کہ زہریلے خاوند سے نجات کے بعد ناصرف وہ خوراک پر کنٹرول پانے میں کامیاب ہوئیں بلکہ ورزش کے لئے بھی ان کا ذہن مائل ہوا اور اب وہ ایک دلکش اور ہلکے پھلکے جسم کی مالک ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -