صدر پیوٹن کے دور حکومت میں روس میں کتنی نئی مساجد تعمیر کی گئیں؟ ایسا انکشاف سامنے آگیا کہ روسی خود بھی دنگ رہ گئے

صدر پیوٹن کے دور حکومت میں روس میں کتنی نئی مساجد تعمیر کی گئیں؟ ایسا انکشاف ...
صدر پیوٹن کے دور حکومت میں روس میں کتنی نئی مساجد تعمیر کی گئیں؟ ایسا انکشاف سامنے آگیا کہ روسی خود بھی دنگ رہ گئے

  

ماسکو(نیوزڈیسک)روسی صدر پیوٹن کو اکثر مغربی میڈیا کی جانب سے تنقید کا نشانہ بنایا جاتا ہے اور ان پر کئی طرح کے الزامات لگائے جاتے ہیں لیکن اگر آپ کو یہ بتایا جائے ان کے دورحکومت میں صرف روس میں 7500مساجد تعمیر کی گئیں تو یقیناًآپ حیران رہ جائیں گے۔یہ تعداد صدر پیوٹن کی حکومت سنبھالنے کے بعد کی ہے یعنی ہر روز ایک سے زیادہ مسجد تعمیر کی جارہی ہے۔اس انکشاف سامنے آنے کے بعد روسی بھی حیران ہیں اور یہ بات سوچنے پرمجبور ہیں کہ اسلام روس میں بھی تیزی سے پھیل رہا ہے۔

روسی اسلامی کمیونٹی کی جانب سے جاری کیے گئے اعدادوشمار کے مطابق یہ تعداد سابق صدر گاربا چوف اور بوریس یلسن کے دور میں تعمیر کی گئی مساجد سے زیادہ ہے۔اوفا میں واقعCentral Muslim Spiritual Directorateکے ہیڈ تلغت تاج الدین کا کہنا ہے کہ مسلمانوں کو اصل خطرہ شدت پسند عناصر سے ہے اور ہمیں اس کے خلاف مل کر کام کرنا ہوگا۔ان کا کہنا تھا کہ مسلمانوں نے روس میں بہت تگ ودو کے بعد اچھا نام بنایا ہے لیکن شدت پسند اس نیک نامی کو تیزی سے مٹی میں ملاسکتے ہیں لہذا ضروری ہے کہ ہم ان پر نظر رکھیں۔ان کا کہنا تھا کہ اگر یورپ محبت کے نام پر اکٹھا ہورہا ہے تو روسی مسلمانوں کو بھی ایسا کرنا ہوگا تا کہ مسلمانوںکے خلاف کی جانے والی کسی بھی قسم کی سازش کو ناکام بنایا جاسکے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -