حکومت نے ٹریکٹرز کے پارٹس کی درآمدات پر 1فیصد ڈیوٹی عائد کر دی

حکومت نے ٹریکٹرز کے پارٹس کی درآمدات پر 1فیصد ڈیوٹی عائد کر دی

  

 لاہور (کامرس رپورٹر)حکومت کی جانب سے لگائے گئے اضافی ٹیکسوں کے اثرات ٹریکٹروں پر بھی پیدا ہوں گے اور ان کی قیمتوں میں 5 سے 10 ہزار اضافے کا امکان پیدا ہو گیا۔ پاکستان آٹو مینوفیکچرز ایسوسی ایشن کے مطابق حکومت نے ٹریکٹرز کے پارٹس کی درآمدات پر 1 فیصد ڈیوٹی عائد کردی ہے۔ جس کے باعث مقامی ٹریکٹروں کی قیمتوں میں 5 سے 10 ہزار اضافہ ہوسکتا ہے۔ قیمتوں میں ہونے والے اضافے سے نہ صرف ٹریکٹرز مینوفیکچرز متاثر ہوں گے بلکہ کسانوں پر بھی اضافی بوجھ پڑے گا۔ دوسری جانب پاما کا کہنا ہے پنجاب اور سندھ کے بجٹ میں اعلان کی گئی ٹریکٹرز سکیم شروع نہ ہونے سیمقامی ٹریکٹر ساز کمپنیاں بری طرح متاثر ہوئیں۔

مالی سال 16۔2015 کی پہلی سہہ ماہی میں ٹریکٹروں کی فروخت 28 فیصد کمی سے 6745 ، جبکہ گذشتہ سال کے اسی عرصے میں 9363 ٹریکٹرز فروخت ہوئے تھے۔ پاما نے مطالبہ کیا ہے کہ حکومت ٹریکٹر کے پارٹس کی امپورٹ پر سے 1 فیصد کسٹم ڈیوٹی فوری طور پر واپس لینے کا اعلان کرے۔

مزید :

کامرس -