عالمی ادبی وثقافتی فیسٹیول کے دوسرے روز 20نشتیں ،پاک وہند مشاعرہ بھی ہوا

عالمی ادبی وثقافتی فیسٹیول کے دوسرے روز 20نشتیں ،پاک وہند مشاعرہ بھی ہوا

  

لاہور(فلم رپورٹر) لاہورآرٹس کونسل(الحمراء) کے زیر اہتمام جاری چھٹی الحمراء عالمی ادبی وثقافتی فیسٹیول کے دوسرے دن 20نشتیں ہوئیں۔ اس کے علاوہ پاک وہند مشاعرے کاانعقاد بھی کیا گیا۔سب سے پہلا اجلاس اردو زبان کی جڑیں منعقد ہوا جس میں ڈاکٹر قاسم بھیگو ،ڈاکٹر تحسین فراقی، ڈاکٹر فخر الحق نوری نے اظہار خیال کیا،’’خواتین فکشن رائٹر‘‘،’’کارٹون کی دنیا‘‘،’’سرائیکی ادب‘‘،’’ یادرفتگان‘‘،’’ علامہ اقبال کا عملی ورثہ‘‘،’’ صحافت -ادب/آداب‘‘،’’ مصوری کی پاکستانی شناخت‘‘،’’ سندھی ادب‘‘،’’ ماں بولی داحق‘‘،’’کہانی کا شناور‘‘،’’ ظفر اقبال کے ساتھ مکالمہ‘‘،’’ ٹی وی ڈرامہ کی بازیافت‘‘،’’بلوچی اور پشتوادب‘‘،’’ہندوستان میں ناول نگاری‘‘،’’ آج کی نشتیں تھیں،جس پر سیرحاصل گفتگو کے مختلف سیشن منعقد ہوئے ۔ الحمراء ہال 2 میں ’’کل اور آج کا تھیٹر‘‘ کے عنوان سے سیشن ہوا جس میں سنیئر اداکار ، رائٹر کمال احمد رضو ی ، مسعود اختر ، اورنگزیب لغاری اور داور محمود سمیت دیگر شخصیات نے شرکت کی۔ جن کا کہنا تھا کہ تھیٹرکی ارتقاء اور حیاء کے لئے اقدامات بہت ضروری ہیں، کمرشل کے نام پر اس کی شکل بگاڑ کر رکھ دی گئی ہے۔ دریں اثناء شنہشاہ غزل مہدی حسن کو خراج تحسین پیش کرنے کے لئے الحمراء ہال 3میں محفل موسیقی ہوئی جس میں استاد حامد علی خان ، غلام عباس اور ڈاکٹر امجد پرویز نے پرفارم کیا ۔ اس پروگرام کی میزبانی ڈاکٹر عمر عادل نے کی ۔آج اس فیسٹول کا آخری روز ہے۔

مزید :

علاقائی -