قومی ائیر لائن،فلائٹ آپریشن کیلئے 17ملکوں کو ماہانہ 7کروڑ روپے کی ادائیگی کرنے لگی

قومی ائیر لائن،فلائٹ آپریشن کیلئے 17ملکوں کو ماہانہ 7کروڑ روپے کی ادائیگی ...

  

لاہور (شہباز اکمل جندران)قومی ائیر لائن ، فلائٹ آپریشن کے لیے دنیا کے 17ملکوں کو ماہانہ 7 کروڑ روپے زائد ادائیگی کرنے لگی۔لینڈنگ اور ٹیکنگ آف فیس کی مد میں ادا کیئے جانے والے یہ اخراجات جہاز کے خالی ہونے یا فلائیٹ کینسل ہونے کی صورت میں بھی ادا کئے جاتے ہیں۔سب سے زیادہ2 کروڑ 17لاکھ روپے سعودی عرب کو دوسرے نمبر پرایک کروڑ 50لاکھ روپے کی ادائیگی برطانیہ کوجبکہ تیسرے نمبر 79لاکھ روپے کی ادائیگی عرب امارات کو کی جاتی ہے۔فیس کی ادائیگی میں تاخیر کی صورت قومی ائیر لائن جرمانہ ادا کرنے کی پابند بھی ہے۔معلوم ہواہے کہ پاکستان انٹر نیشنل ائیر لائن کارپوریشن دنیا بھر میں فلائٹ آپریشن کے عوض ماہانہ 7کروڑ 25لاکھ روپے سے زائد ادائیگی کرتی ہے۔یہ ادائیگی صرف قومی ائیر لائن ہی نہیں کرتی بلکہ دنیا بھر کے ہوائی اڈوں کی انتظامیہ تمام ائیر لائنوں سے ان کے جہازوں کی پرواز اور لینڈنگ کی فیس وصول کرتی ہے۔اور اس کے عوض ایئر لائنوں کو بحفاظت پرواز بھرنے ، بحفاظت لینڈ نگ کرنے ، جہاز پارک کرنے ،فیول بھرنے ،جہازوں کی صفائی ستھرائی ائیر پورٹ شٹل بس استعمال کرنے اور جہازوں کے لیے تکنیکی معاونت کی جاتی ہے۔البتہ فیول بھرنے اورجہازوں کی اوورہالنگ یا سروس کے الگ چارجز وصول کئے جاتے ہیں۔ جبکہ ائیر پورٹ شٹل بس کا انتظام بھی ائیر لائن کا اپنا ہوتا ہے۔تاہم اس کی اجازت ایوی ایشن دیتی ہے۔ذرائع کے مطابق قومی ائیر لائن فلائیٹ آپریشن کے عوض ایک ماہ کے دوران سب سے زیادہ2 کروڑ 5لاکھ روپے سعودی عرب کو دوسرے نمبر پرایک کروڑ 50لاکھ روپے کی ادائیگی برطانیہ کوجبکہ تیسرے نمبر 79لاکھ روپے کی ادائیگی عرب امارات کوکرتی ہے۔۔فیس کی ادائیگی میں تاخیر کی صورت قومی ائیر لائن جرمانہ ادا کرنے کی پابند بھی ہوتی ہے۔بتایا گیا ہے کہ پی آئی اے ہر ماہ عرب امارات کی ابو ظہبی ایوی ایشن کو 17لاکھ روپے، بحرین ایوی ایشن کو 2لاکھ روپے،برطانیہ کی برمنگم ایوی ایشن کو 50لاکھ روپے، بھارت کی ممبئی ایوی ایشن کو 8لاکھ روپے،فرانس کی پیر س ایوی ایشن کو 35لاکھ روپے، ڈنمارک کی کوپن ہیگن ایوی ایشن کو 15لاکھ روپے،بنگلادیش کی ڈھاکہ ایوی ایشن کو 13لاکھ روپے، بھارت کی دہلی ایوی ایشن کو 4لاکھ روپے،سعودی عرب کی دمام ایوی ایشن کو 12لاکھ روپے، قطر کی دوھا ایوی ایشن کو 6لاکھ روپے، عرب امارات کی دبئی ایوی ایشن کو 60لاکھ روپے۔ سعودی عرب کی جدا ایوی ایشن کو ایک کروڑ 2لاکھ روپے، ملائیشیا کی کو آلالمپور ایوی ایشن کو 12لاکھ روپے،کویت ایوی ایشن کو 5لاکھ روپے، افغانستان کی کابل ایوی ایشن کو 7لاکھ روپے، برطانیہ کی لندن ایوی ایشن کو 43لاکھ روپے،برطانیہ ہی کی مانچسٹر ایوی ایشن کو 56لاکھ روپے،عمان کی مسقط ایوی ایشن کو 15لاکھ روپے،سعودی عرب کی مدینہ ایوی ایشن کو 34لاکھ روپے، اٹلی کی میلان ایوی ایشن کو 30لاکھ روپے،امریکہ کی نیویار ک ایوی ایشن کو 39لاکھ روپے،ناروے کی اوسلو ایوی ایشن کو 4لاکھ روپے،چین کی بیجنگ ایوی ایشن کو 22لاکھ روپے، سعودی عرب کی ریاض ایوی ایشن کو 68لاکھ روپے، عرب امارت کی شارجہ ایوی ایشن کو ایک لاکھ روپے،جاپان کی ٹوکیو ایوی ایشن کو 21لاکھ روپے اور ٹورنٹو کے شہر کینیڈا کی ایوی ایشن کو ہر ماہ 35لاکھ روپے سے زائد ادائیگی کرتی ہے۔

مزید :

علاقائی -