عدالت عالیہ میں نیٹ ورکنگ کی خرابی ،جامع انکوائری کا حکم دیدیا گیا

عدالت عالیہ میں نیٹ ورکنگ کی خرابی ،جامع انکوائری کا حکم دیدیا گیا

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ نے عدالت عالیہ میں نیٹ ورکنگ کی خرابی کی وجوہات اور ذمہ داروں کا تعین کرنے کے لئے جامع انکوائری کا حکم دے دیا، چیف جسٹس نے رجسٹرار ہائیکورٹ کو ہدایت کی ہے کہ اس بحران کی ہر پہلو سے تحقیقات کی جائیں ۔لاہور ہائیکورٹ میں 6دن قبل آئی ٹی سرور کے ڈاؤن ہونے کی وجہ سے عدالت عالیہ کی تمام برانچوں میں نیٹ ورکنگ خراب ہو گئی تھی جس کے باعث یکم ستمبر سے 7دسمبر تک تیرہ ہفتوں کا مقدمات کا ڈیٹا ضائع ہو چکا ہے ، ذرائع کے مطابق ڈیٹا کو ریکور کرنے کیلئے تاحال کوششیں کی جا رہی ہیں مگر ابھی تک ڈیٹا ریکور نہیں ہو پا رہا ہے جس کے بعد عدالت عالیہ کی متعلقہ برانچوں میں اضافی ڈیٹا انٹری آپریٹرز بٹھا دیئے گئے ہیں جو نئے سرے سے تیرہ ہفتوں کے ڈیٹا کا کمپیوٹر میں اندراج کر رہے ہیں،نیٹ ورکنگ کی خرابی اور مقدمات کا ڈیٹا ضائع ہونے کے باعث تمام جوڈیشل برانچوں، ریکارڈ روم، نقل برانچ اور دیگر متعلقہ برانچوں میں کام کا بوجھ بھی بڑھ گیا ہے، چیف جسٹس نے رجسٹرار ہائیکورٹ طارق افتخار کو ہدایت کی ہے کہ آئی ٹی سرور اور نیٹ ورکنگ کی خرابی کی وجوہات پرجامع رپورٹ تیار کی جائے اور اگر آئی ٹی برانچ سمیت دیگر برانچوں کا کوئی بھی افسر اس غفلت کا ذمہ دار ہے تو اس کا تعین کر کے بھی رپورٹ جمع کرائی جائے۔

مزید :

علاقائی -