پولیس افسر سگین جرائم میں ملوث اشتہاریوں کیخلاف کریک ڈاؤن کریں امین وینس

پولیس افسر سگین جرائم میں ملوث اشتہاریوں کیخلاف کریک ڈاؤن کریں امین وینس

  

 لاہور(کرائم رپورٹر) سی سی پی او لاہو ر کیپٹن (ر) محمد امین وینس نے کہا ہے کہ قتل، اقدام قتل، ڈکیتی اور راہزنی سمیت Aکیٹگری کے اشتہاریوں کی گرفتاری کیلئے بھر پور کریک ڈاؤن شروع کیا جائے اورڈویژنل ایس پیز اپنے ڈویژن کے خطرناک اشتہاریوں کی گرفتار ی کیلئے ریڈ پلان خو د ترتیب دیں ۔ انہوں نے کہاکہ ریڈ پلان میں مستعد بیٹ کانسٹیبلز کو پلان کے حوالے سے تفصیلی بریف کریں تا کہ ان ریڈ ز کو نہ صرف موثر بلکہ کامیاب بنایا جا سکے ۔انہوں نے مزید کہاکہ تمام ایس پیز اس بات کو یقینی بنائیں کہ کسی بھی جرم میں جہاں لائسنس والا اسلحہ استعمال ہو ں اس اسلحہ کے لائسنس کو کینسل کروانے کیلئے فوری طور پر کیس تیار کرکے متعلقہ حکام کو بھجوائیں اوراس کیس کی پیروی کو یقینی بناتے ہوئے جلد از جلد لائسنس کو کینسل کروایا جائے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گز شتہ روز اپنے دفتر میں آپریشنز و انوسٹی گیشن ونگ کے مشترکہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں ڈی آئی جی آپریشنز و انوسٹی گیشن ڈاکٹر حیدر اشرف اور چوہدری سلطان ، ڈی آئی جی سیکورٹی محمد ادریس، ایس ایس پی انوسٹی گیشن حسن مشتا ق سکھیرا ، سی ٹی او طیب حفیظ چیمہ اور ایس ایس پی سی آئی اے محمد عمر ورک کے علاوہ تما م آپریشنز و انوسٹی گیشن کے ڈویژنل ایس پیز ایس پی مجاہد بھی موجود تھے ۔سی سی پی او نے افسران کو ہدایت کرتے ہوئے کہاکہ مال خانوں کا فوری آڈٹ کروایا جائے اور مال خانے میں موجود سامان کی مکمل تفصیلات بنا کر ایک ہفتے میں انہیں رپورٹ پیش کی جائے ۔انہوں نے ڈی آئی جی انوسٹی گیشن کو ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ سنگین مقدمات میں ملوث ملزم جو ضمانتوں پر رہا ہوں ان کے ضمانتی مچلکوں کو ضرور چیک کرویا جائے۔ کیپٹن( ر) محمد امین وینس نے مزید ہدایات دیتے ہوئے ڈی آئی جی انوسٹی گیشن کو کہاکہ اس بات کو ہر صورت یقین بنایا جائے کہ کوئی پولیس اہلکار انپی گواہی سے منحرف نہ ہو اور عدالتوں میں بروقت گواہی دے کرآئے۔ سی سی پی او نے ٹریفک کے بہاؤ کو رواں دواں رکھنے کے حوالے سے اورنج لائن ٹرین کے ٹریک کی تعمیر سے ٹریفک کے لئے پیدا ہونے واے مسائل کو دور کرنے کیلے سی ٹی اوکو ذاتی دلچسپی لیتے ہوئے ان مقامات پر زیادہ وارڈنز کے تعیناتی کیساتھ ساتھ موثر نگرانی کے نظام کی ضروت پر زور دیا اور کہاکہ جہاں کہیں ٹریفک کی روانی کیلئے مقامی پولیس کی مدد درکار ہوں اس کیلئے متعلقہ ایس پی سے رابطہ کیا جائے جو ٹریفک پولیس کی ہر ممکن امداد کا انتظام کرے گا۔ سی سی پی او نے کہا کہ نائٹ پٹرولنگ کو مزید موثر بنایا جائے اور ایس پی کی نائٹ پٹرولنگ کا اثر نظر آنا چاہیے انہوں نے نائٹ پٹرولنگ کرنے والے ایس پی کی حاضری صبح گیارہ بجے کی بجائے دوپہر ایک بجے کرنے کے احکامات بھی جاری کیے ۔

مزید :

علاقائی -