ڈیفنس ،2افرادکے قتل کیخلاف ورثاکا نعشیں سڑک پررکھ کراحتجاج

ڈیفنس ،2افرادکے قتل کیخلاف ورثاکا نعشیں سڑک پررکھ کراحتجاج
 ڈیفنس ،2افرادکے قتل کیخلاف ورثاکا نعشیں سڑک پررکھ کراحتجاج

  

لاہور (خبر نگا ر ) ڈ یفنس میں دو افراد کے قتل کیخلاف ورثاکا ڈیفنس روڈ پر لاشیں رکھ کر3گھنٹے تک احتجاج ۔ ٹریفک بلاک اورمظاہرین نے گاڑیوں پر ڈنڈے برسائے ۔وزیر اعلیٰ پنجا ب کے نو ٹس لینے پر لا ہور پو لیس حر کت میں آ گئی۔ سی سی پی اولا ہور نے فو ر ی ایک ملزم کی گرفتا ر ی سے میڈیا کو آگا ہ کیا جبکہ دوسرے با اثر ملزم کوگرفتا ر کر نے کے لئے ٹیم تشکیل دے دی ہے ۔ تفصیلا ت کے مطا بق ڈیفنس سپر ٹاؤن میں دو روز قبل محلہ کے ہی دو گروپ شانی ڈا ن اور کا مرا ن میں قبضہ کی جگہ کے تنا زع شدید فائرنگ کا تبادلہ ہوا جس کی زد میں اکر راہ گیر یوسف اور شمیم جاں بحق ہوگئے تھے۔پو لیس کے مطا بق40سا لہ یو سف گو ڑا پنڈ کا ر ہا ئشی تھا اور 6بچو ں کا با پ تھا ۔ جبکہ 45سا لہ شمیم بی بی بھی 5بچو ں کی ما ں تھی ۔ پو لیس نے لا شیں پوسٹ مارٹم کے بعد ورثا کے حوالے کیں تو دونوں مقتولین کے ورثا اور اہل علاقہ نے لاشیں سڑک پر رکھ کر ڈیفنس روڈ بلاک کردیا اور پولیس کے رویئے کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔ انہوں نے الزام لگایا کہ پو لیس ملزموں کو دانستہ گرفتار نہیں کررہی۔ملزم علاقہ میں ہی موجود ہیں۔مظاہرے کے دوران دونوں لاشوں کے لواحقین کے درمیان تلخ کلامی بھی ہوئی ۔مظاہرین کا مطالبہ تھا کہ اعلیٰ حکا م واقع کا نوٹس لیں اور انہیں انصاف کی یقین دہانی کرائی جائے۔ مظاہرین نے یہ دھمکی بھی دی کہ جب تک ملزموں کو گرفتارنہیں کیا جاتا وہ احتجاج جاری رکھیں گے۔ جس پر وزیر اعلیٰ پنجا ب نے واقع کا نو ٹس لیا اور سی سی پی او لا ہور کو کا رروا ئی کی ہدا یت کی تو پو لیس حر کت میں آ گئی اور ایک گرو پ کے مر کزی ملزم کا مرا ن کوپولیس نے حرا ست میں لے لیا ۔ جس پر مظا ہر ین منتشر ہو گئے اور مظا ہر ہ ختم کردیا ۔ مقتو ل یو سف کے بھا ئی اصغرنے نما ئند ہ پاکستا ن کو بتا یا کے پو لیس وقوعہ کے روز موقعہ پر ایک گھنٹہ تا خیر سے پہنچی تھی جس پر ملزما ن فرا ر ہو گئے تھے ۔را ت گئے دونو ں مقتو لین کو سینکڑو ں سوگوارو ں کی موجودگی میں ان کو مقامی قبر ستا ن میں سپرد خا ک کردیا گیا۔ اس موقع پر پو لیس کی بھا ر ی نفر ی بھی موجود تھی ۔ دوسری جانب روڈ بلاک ہونے سے ٹریفک جام ہوگئی جس سے شہریوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔

مزید :

علاقائی -