آپریشن ضرب عضب کو ڈیڑھ سال مکمل ،34سودہشتگرد ہلاک کئے ،آئی ایس پی آر

آپریشن ضرب عضب کو ڈیڑھ سال مکمل ،34سودہشتگرد ہلاک کئے ،آئی ایس پی آر

  

راولپنڈی(اے این این) پاک فوج کے دہشت گردوں کیخلاف فیصلہ کن آپریشن ضرب عضب کوڈیڑھ سال مکمل ، تین ہزار 400 دہشت گردوں کو ہلاک، 21 ہزار 193 کو گرفتار کیا گیا، دہشت گردوں کی 837 محفوظ پناہ گاہیں تباہ کردی گئیں، 488 فوجیوں نے جام شہادت نوش کیا ، ملک بھر میں قائم 11 فوجی عدالتوں میں 142 مقدمات بھیجے گئے جن میں سے 55 پر فیصلے سنائے جاچکے جبکہ 87 زیر سماعت ہیں ۔ہفتہ کو فوج کے شعبہ تعلقات عامہ(آئی ایس پی آر)کے ڈائریکٹرجنرل لیفٹیننٹ جنرل عاصم سلیم باجوہ نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ’’ ٹوئٹر‘‘ پر اپنے پیغام میں کہا کہ آپریشن ضرب عضب کو ڈیڑھ برس مکمل ہوگیا اس دوران کئی اہداف حاصل کرلئے گئے، دہشت گردوں کی کمر توڑ دی گئی ہے، تہواروں اور سماجی تقریبات کا انعقاد اس بات کا ثبوت ہے کہ ملک میں امن و امان کی صورتحال بہتر ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ آرمی پبلک اسکول کے سانحے کے بعد پاک فوج نے دہشت گردوں کے خلاف آپریشن تیز کیا، آپریشن کے آخری مرحلے میں پاک افغان سرحدی علاقے کو دہشت گردوں سے صاف کیا جارہا ہے۔ اب تک ملک بھر میں انٹیلی جنس کی بنیاد پر 13 ہزار 200 آپریشن کئے گئے۔ ان کارروائیوں میں 3 ہزار 400 دہشت گرد ہلاک جبکہ 21 ہزار 193 کو گرفتار کیا گیا، اس کے علاوہ دہشت گردوں کی 837 محفوظ پناہ گاہیں بھی تباہ کی گئیں۔لیفٹیننٹ جنرل عاصم باجوہ نے کہا کہ دہشت گردوں کے خلاف کارروائیوں میں سیکیورٹی فورسز کو بھی بے پناہ قربانیاں دینا پڑیں، ان کارروائیوں میں مجموعی طور پر 488 سیکیورٹی اہلکاروں نے جام شہادت نوش کیا جب کہ ایک ہزار 914 اہلکار زخمی ہوئے، شہید اور زخمی اہلکاروں میں پاک فوج، ایف سی خیبر پختونخوا و بلوچستان، پولیس اور سندھ رینجرز کے جوان شامل ہیں۔ اس کے علاوہ ملک بھر میں قائم 11 فوجی عدالتوں میں 142 مقدمات بھیجے گئے جن میں سے 55 پر فیصلے سنائے جاچکے جبکہ 87 زیر سماعت ہیں، ان مقدمات میں 31 دہشت گردوں کو سزائیں سنائی جاچکی ہے

مزید :

صفحہ اول -