بیرونی بینکوں میں دولت کی واپسی سے ملک ٹیکس فری بن سکتا ہے،مشتاق احمد خان

بیرونی بینکوں میں دولت کی واپسی سے ملک ٹیکس فری بن سکتا ہے،مشتاق احمد خان

  

 صوابی( بیورورپورٹ)امیر جماعت اسلامی صوبہ خیبر پختونخوا مشتاق احمد خان نے کہا ہے کہ اگر بیرون ملک کے بڑے بڑے بینکوں میں پاکستانی حکمرانوں کے پڑی تیس ہزار ارب روپے واپس لائی جائے تو دنیا میں پاکستان ٹیکس فری ملک بن سکتا ہے۔ یہاں سے کوئی نوجوان سعودی عرب ، امارات یا دیگر ممالک میں مزدوری کر نے کے لئے نہیں جائینگے۔ بلکہ بیرون ممالک سے لوگ پاکستان آکر ر روزگار کرینگے۔اپنے گاؤں باکر ضلع صوابی میں مقامی صحافیوں سے گفتگو کر تے ہوئے انہوں نے واضح کر دیا کہ پاک چائنہ اقتصادی راہداری منصوبہ گیم چینجر ہے۔ اس منصوبے کو متنازغہ بنانے والے حکمران ملک کے مستقبل سے کھیل رہے ہیں۔ جماعت اسلامی پاکستان اس منصوبے میں خیبر پختونخوا اور فاٹا کو کسی صورت نظر انداز نہیں ہونے دے گی۔ اور خیبر پختونخوا کے آئینی اور مالیاتی حقوق کے حصول کے لئے آخری حد تک جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ سود کی تحفظ کی بات کر کے صدر پاکستان نے حلف سے غداری کی ہے۔ مشتاق احمد خان نے کہا کہ پاکستان سیکو لر ازم یا لبرل ازم کے لئے نہیں بلکہ اسلام کے لئے چودہ اگست 1947کو معرض وجود میں آیا تھا۔ مگر بد قسمتی سے کسی حکمران نے اسلام کا عادلانہ نظام نافذ نہ کیا۔اور آج حکمران قر آن و سنت کے بجائے مغرب کے بیہودہ تہذیب نافذ کرنا چاہتے ہیں۔ سیکو لر ازم کی باتیں کر نے والوں نے اس ملک کو لوڈ شیڈنگ کے اندھیروں میں دھکیلا ہے۔ سیکو لر حکمرانوں کی وجہ سے ملک کے عوام تعلیم، صحت ، عدل وانصاف اور ترقی و خوشحالی سے محروم ہیں۔ بر طانیہ کے وزیر اعظم کا ذاتی گھر لندن میں نہیں ہے جب کہ ہمارے حکمرانوں کے بر طانیہ سمیت دیگر ممالک میں محلات اور پلازے ہیں۔ چیر مین نیب کی رپورٹ کے مطابق پاکستان میں سالانہ چار ہزار ارب روپے کرپشن ہمارے حکمران کر رہے ہیں۔ جب کہ سرکاری محکموں اور اداروں میں روزانہ چودہ ارب روپے کی کرپشن کی جارہی ہے۔ اسی طرح سالانہ چودہ ہزا ر ارب روپے کی چوری کر تے ہیں یہ چیر مین نیب کی رپورٹ ہے۔ انہوں نے کہا کہ چور کسی صورت چور کا احتساب نہیں کر سکتا ۔ بلکہ چوروں کا احتساب با کر دار ، امانت دار ، نیک اور صالح قیادت ہی کر سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسلام پاکستان، خوشحال پاکستان ، ملک کی آزادی اور خوشحالی جماعت اسلامی کا وژن ہے۔ عوام پاکستان کے روشن مستقبل کے لئے جماعت اسلامی کا ساتھ دیں۔ پاکستان کرپشن ، چوری اور لوٹ مار کے لئے نہیں بلکہ اسلام کے عادلانہ نظام کے لئے بنا تھا۔ کرپشن کر نے والوں کو ڈی آئی خان اور ہری پور کے جیلوں میں بند کر کے سخت سے سخت سزا ئیں دی جائے تاکہ مستقبل میں کوئی ملک کی دولت بے دریغی سے نہ لوٹ سکے۔ یہ پاکستان کا اشرافیہ بلکہ بد معاشیہ طبقہ ہے جو ہر دور میں قابض چلا آرہا ہے۔لوٹ مار کے لئے قوم پر پے د رپے ٹیکسز نافذ کر تے ہیں حتی کہ بچوں کے ٹافیوں پر بھی ٹیکس لگا دیا گیا جماعت اسلامی کی سیاست ، خدمت اور فلاح و بہبود کے کاموں کا مقصد رضاء الہی ہے۔ تاکہ اللہ پاک ہم سے خوش ہو کر خوبصورت جنت الفردوس میں جگہ عطا فر مائیں ۔بیرون ملک میں پاکستان سے چوری ہونے والے پیسے ہمیں دوبارہ سود پر دیتے ہیں سود کا یہ ڈرامہ 68 سالوں سے چلا آرہا ہے۔ جماعت اسلامی واحد جماعت ہے جس میں موروثی سیاست کا تصور نہیں ہے ایک عام ورکر بڑے عہدے پر فائز ہو سکتا ہے۔ دیگر جماعتوں میں جمہوریت نہ ہونے کی وجہ سے خاندانوں کی اجارہ داری ہوتی ہے جو اقربہ پروری سے نہیں نکل سکتا ہے #

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -