نادرا نے پی پی دور کے 400ملازمین کو فارغ کرنے کی تیاری کر لی

نادرا نے پی پی دور کے 400ملازمین کو فارغ کرنے کی تیاری کر لی

  

اسلام آباد (آن لائن) نادرا نے 400 ملازمین کو فارغ کرنے کی تیاری کر لی ہے ۔ پیپلزپارٹی کے دور حکومت میں نوکریاں حاصل کرنے والے ملازمین کی چھٹی کرائی جا رہی ہے ۔ نادرا حکام کے مطابق ملازمین کو کنٹریکٹ ختم ہونے پر فارغ کیا جا رہا ہے کیونکہ نادرا کے پاس تنخواہیں دینے کے لئے بجٹ میں کمی کا سامنا ہے ۔ ملازمین کی اچانک برطرفی کے فیصلے سے 400 گھروں کے چولہے ٹھنڈے ہونے کا امکان ۔ برطرف ہونے والے نادرا ملازمین کا کہنا تھا کہ نادرا کا یہ فیصلہ سروس سٹرکچر کی خلاف ورزی ہے نادرا سروس ریگولیشن 2002 کے مطابق ملازمین کی پروموشن ، ٹرانسفرز اور فارغ کرنے جیسے واضح نظام نہ ہونے کی وجہ سے ملازمین سے غیر قانونی سلوک کیا جا رہا ہے ۔ نادرا میں 16000 ملازمین میں سے 25 ڈائریکٹر جنرل ہیں اور 100 سے زیادہ ڈائریکٹرز کو غیر قانونی کے ذریعے بڑے عہدوں پر تعینات کیا گیا ہے ۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق سال 2008 میں 12 افراد کو ڈائریکٹ انیسویں سکیل میں بھرتی کیا گیا اور ڈائریکٹر تعینات کیا گیا ہے نادرا نے کافی ملازمین کو غیر قانونی طریقے سے پروموشن دی گئی ہیں جن میں احتشام شاہد اسسٹنٹ ڈائریکٹر کے عہدے پر بھرتی کیا گیا مگر 9 سال کے محدود عرصے میں تین پروموشن دے کر 20 گریڈ کے عہدے پر فائز کر دیا گیا ہے ۔اسی طرح موجود ڈی جی آپریشن و ٹیکنیکل آفیسر ذوالفقار علی کو سال 2002 میں اسسٹنٹ ڈائریکٹر کے طور پر بھرتی کیا گیا اور اب وہ 20 گریڈ میں ترقی دے دی گئی ہے اس طرح کافی آفیسران کو غیر قانونی طریقے سے ترقیاں دی گئی ہیں اور چھوٹے اسکیل کے ملازمین کو نادرا سے فارغ کیا جا رہا ہے جو کہ متاثرین ملازمین کے ساتھ ظلم ہے

مزید :

ملتان صفحہ اول -