سعودی عرب نے متعمرین اور زائرین کو ویزے کی قانونی مدت میں واپس نہ جانے پر سخت سزاﺅں کا عندیہ دے دیا

سعودی عرب نے متعمرین اور زائرین کو ویزے کی قانونی مدت میں واپس نہ جانے پر سخت ...
سعودی عرب نے متعمرین اور زائرین کو ویزے کی قانونی مدت میں واپس نہ جانے پر سخت سزاﺅں کا عندیہ دے دیا

  

ریاض(ڈیلی پاکستان آن لائن)سعودی عرب نے معتمرین اور زائرین کو تنبہہ کی ہے کہ وہ سعودی عرب میں قیام کی قانونی مدت کی سختی سے پابندی کریں ،مقررہ وقت گزرنے کے باوجود سعودی عرب میں قیام کرنے والوں کو پچاس ہزار سے ایک لاکھ ریال (14لاکھ سے 28لاکھ تقریباً)تک جرمانہ اور چھ ماہ سے ایک سال تک قید کی سزا ہو سکتی ہے ۔

بغیر پردے کے سعودی عرب میں تصویر کھنچوانے والی یہ لڑکی تو آپ کو یاد ہو گی ،اب یہ کدھر ہے اور حکومت اس کے ساتھ کیا کرنے جا رہی ہے ،سن کر آپ ہی کانپ اٹھیں گے

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سعودی عرب کے ڈائریکٹو ریٹ جنرل برائے پاسپورٹ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ زائرین اور معتمرین ویزے کی قانونی مدت کے اندر اندر واپسی یقینی بنائیں، ویزے کی مدت گذرنے کے بعد بھی سعودی عرب میں قیام کرنے والے افراد کے خلاف سخت قانونی کارروائی کی جائے گی۔انہوں نے کہاکہ ویزہ کی مجاز مدت ختم ہونے کے بعد واپس نہ لوٹنے وال معمترین کو پچاس ہزار ریال جرمانہ، چھ ماہ قید اور ملک بدری کی سزا دی جائے گی۔ان کا کہنا تھا کہ ویزہ سروسز فراہم کرنے والی کمپنیوں اور حج وعمرہ ٹورآپریٹریز کی ذمہ داری ہے کہ وہ تاخیر کرنے والے معتمرین کے بارے میں متعلقہ حکام کو فوری طور پر مطلع کریں، اطلاع نہ دینے پر کمپنی کے ذمہ داران کو ایک لاکھ ریال جرمانہ کی سزا دی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ عمرہ ویزہ کے قواعد کی خلاف ورزی کی مرتکب فرموں اور سعودی عرب میں معتمرین کو سروسز فراہم کرنے والے ان اداروں کے خلاف بھی سخت قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی جو غیرملکی معتمرین کے حوالے سے قانون کی خلاف ورزی کریں گے اور واپسی میں تاخیر کرنے والے غیرملکی معتمرین کو تحفظ دینے کے جرم میں ایک لاکھ ریال جرمانہ، کمپنی کے ڈائریکٹر کو ایک سال قید اور ملک بدری کی سزا ہوسکتی ہے۔

مزید : عرب دنیا