قطر کا غیر ملکیوں کی سب سے بڑی پریشانی ختم کرنے کا اعلان، ایسا حکم دیدیا کہ تارکین وطن کی خوشیوں کا ٹھکانہ نہیں رہے گا

قطر کا غیر ملکیوں کی سب سے بڑی پریشانی ختم کرنے کا اعلان، ایسا حکم دیدیا کہ ...
قطر کا غیر ملکیوں کی سب سے بڑی پریشانی ختم کرنے کا اعلان، ایسا حکم دیدیا کہ تارکین وطن کی خوشیوں کا ٹھکانہ نہیں رہے گا

  

دوحہ (ڈیلی پاکستان آن لائن) قطر نے متنازعہ ”کفالہ“ سسٹم کے تحت ملازمین پر لاگو قوانین ختم کرنے کا باضابطہ طور پر اعلان کر دیا ہے۔ فٹ بال ورلڈ کپ 2022ءکے میزبان ملک کی جانب سے ملازمین کیلئے کی جانے والی یہ سب سے بڑی اصلاحات تھیں۔ قطر کے وزیر محنت عیسیٰ بن سعد الجفالی النوائیمی نے اعلان کیا کہ کفالہ قوانین 13 دسمبر سے ختم ہو جائیں گے۔

سعودی عرب نے متعمرین اور زائرین کو ویزے کی قانونی مدت میں واپس نہ جانے پر سخت سزاﺅں کا عندیہ دے دیا

انہوں نے کہا کہ ملک میں 2.1 ملین غیر ملکی ملازمین کیلئے کنٹریکٹ بیسڈ سسٹم کفالہ قوانین کی جگہ لے لیگا۔ کفالہ قوانین کے تحت قطر میں مقیم تمام غیر ملکی ملازمین کو قطری شہری یا پھر قطری کمپنی کی ضرورت تھی اور نوکری بدلنے یا ملک چھوڑنے کیلئے ان کی اجازت لینا بھی ضروری تھا۔

وزیر محنت کا کہنا ہے کہ ” نئے قوانین قطر میں مقیم غیر ملکی ملازمین کے حقوق میں بہتری اور حفاظت کی جانب تازہ ترین اقدام ہے۔ کفالہ سسٹم کو جدید کنٹریکٹ بیسڈ سسٹم سے بدلا جائے گا جو ملازمین کے حقوق کی حفاظت کرتا ہے اور نوکریوں میں مزید لچک پیدا کرتا ہے۔“

قطری حکام کا کہنا ہے کہ نئے قوانین کے تحت نقل و حرکت کی آزا دی کی مکمل گارنٹی ہے جبکہ ملازمین کو نوکری بدلنے کا حق بھی دیا جا رہا ہے۔ جس بھی ملازم کے ساتھ برا سلوک ہو گا وہ نوکری بدلنے کا مجاز ہو گا۔ 

بغیر پردے کے سعودی عرب میں تصویر کھنچوانے والی یہ لڑکی تو آپ کو یاد ہو گی ،اب یہ کدھر ہے اور حکومت اس کے ساتھ کیا کرنے جا رہی ہے ،سن کر آپ ہی کانپ اٹھیں گے

کفالہ سسٹم کے تحت ملک چھوڑے کیلئے باضابطہ ویزے کی ضرورت کا قانون بھی ختم ہو جائے گا البتہ ملازمین کو ملک چھوڑنے کیلئے اس کمپنی یا فرد کی اجازت ضرورت ہو گی جس کے پاس وہ کام کر رہا ہے۔

حکام نے ملک چھوڑنے کی اجازت نہ دینے والے افراد کیخلاف اپیلیں کرنے کیلئے ایک کمیٹی بھی قائم کر دی ہے جو منگل سے اپنا کام شروع کرے گی۔کفالہ سٹم کے تحت ملازمین کے پاسپورٹ ضبط کرنے والے افراد کو 10,000 قطری ریال سے لے کر 25,000 قطری ریال تک جرمانہ بھی کیا جا سکتا ہے۔

مزید : عرب دنیا /اہم خبریں