’ہم نے تیسری عالمی جنگ کی تیاری کرلی ہے اور اسرائیل کو تباہ کردیں گے‘ اہم اسلامی ملک نے ایسی دھمکی دے دی کہ ٹرمپ کے ہاتھوں کے طوطے اُڑگئے

’ہم نے تیسری عالمی جنگ کی تیاری کرلی ہے اور اسرائیل کو تباہ کردیں گے‘ اہم ...
’ہم نے تیسری عالمی جنگ کی تیاری کرلی ہے اور اسرائیل کو تباہ کردیں گے‘ اہم اسلامی ملک نے ایسی دھمکی دے دی کہ ٹرمپ کے ہاتھوں کے طوطے اُڑگئے

  

تہران (مانیٹرنگ ڈیسک) کئی دہائیوں پر مبنی کوششوں کے بعد بالآخر مغربی طاقتوں اور ایران کے درمیان نیوکلیئر معاہدہ طے پایا، جس کی روشنی میں ایران پر عائد عالمی پابندیاں ختم کردی گئیں اور اسے تیل برآمد کرنے کی اجازت مل گئی۔ امریکی صدر باراک اوباما اس معاہدے کو اپنے دور کی اہم ترین کامیابیوں میں سے ایک قرار دیتے ہیں، لیکن ان کے جانشین ڈونلڈ ٹرمپ اس معاہدے کا خاتمہ کر کے سب کچھ درہم برہم کرنے پر تلے ہوئے ہیں۔نامزد امریکی صدر کے ارادوں کو بھانپتے ہوئے ایران نے بھی انہیں کچھ ایسے الفاظ میں خبردار کردیا ہے کہ شاید اب وہ ایران کے خلاف بات کرنے سے پہلے سو بار سوچیں گے۔

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق ایرانی وزیر دفاع حسین دہقان کی طرف سے جاری کئے گئے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے اگر ایران کو مزید مشتعل کرنے کی کوشش کی تو اس کا نتیجہ عالمی جنگ کی صورت میں سامنے آسکتا ہے، اور اس جنگ میں امریکہ کا قریبی ترین دوست اسرائیل صفحہ ہستی سے مٹ سکتا ہے۔ انہوں نے تہران میں منعقد ہونے والی ایک سکیورٹی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نامزد امریکی صدر کے بیانات نے مشرق وسطیٰ میں ان کے اتحادیوں کو بھی خوف میں مبتلا کردیا ہے اور مغربی ممالک بھی غیر یقینی صورتحال سے دوچار ہیں۔

اقتدار سے محروم ہونے سے قبل ہی صدام حسین حکومت ’چھوڑ‘ چکے تھے، ایسا انکشاف کہ سن کر ساری دنیا دنگ رہ گئی

حسین دہقان کا مزید کہنا تھا، ”اگرچہ وہ(ڈونلڈ ٹرمپ) ایک کاروباری شخصیت ہیں لیکن ان کے ماتحتوں نے ان کے لئے ایک مختلف راستہ چن لیا ہے، جس کے نتیجے میں دنیا میں بے چینی کی فضا پھیل رہی ہے، خصوصاً خلیجی ممالک میں۔“ انہوں نے امریکہ کو خبردار کرتے ہوئے کہا، ”دشمن محض اپنی مادی برتری کے زعم میں مبتلا ہوکر ہم پر جنگ مسلط کرنے کی کوشش کرسکتا ہے لیکن اس جنگ کا نتیجہ صیہونی ریاست (اسرائیل) کے خاتمے کی صورت میں سامنے آئے گا اور پورے خطے میں اس کے شعلے پھیلنے کا مطلب ایک عالمی جنگ ہوگا۔“

انہوں نے اس جنگ کو خلیج فارس کے جنوبی ساحل پر واقع عرب ریاستوں کے لئے بھی خطرہ قرار دیا۔ ان ریاستوں میں متحدہ عرب امارات، بحرین اور قطر وغیرہ شامل ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ چونکہ ڈونلڈ ٹرمپ ہر چیز کو ڈالروں میں ماپتے ہیں اس لئے یہ امکان کم ہے کہ وہ ایران کے خلاف کسی سخت اقدام کا خطرہ مول لیں گے۔

مزید : بین الاقوامی