’ملک میں مقیم غیر ملکیوں کے لئے ہمیں کسی صورت یہ کام نہیں کرنا چاہیے‘ عرب خاتون سیاستدان کا ایسا اعلان کہ جان کر آپ بھی افسردہ ہوجائیں گے

’ملک میں مقیم غیر ملکیوں کے لئے ہمیں کسی صورت یہ کام نہیں کرنا چاہیے‘ عرب ...
’ملک میں مقیم غیر ملکیوں کے لئے ہمیں کسی صورت یہ کام نہیں کرنا چاہیے‘ عرب خاتون سیاستدان کا ایسا اعلان کہ جان کر آپ بھی افسردہ ہوجائیں گے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کویت سٹی (مانیٹرنگ ڈیسک) عرب ممالک میں غیر ملکیوں کو عام حالات میں تو مشکلات کا سامنا رہتا ہی ہے لیکن افسوس کہ جب وہ بستر مرگ پر پڑے ہوں تو بھی ان پر کسی کو رحم نہیں آتا۔ ایک کویتی شہری کے بہیمانہ تشدد کے نتیجے میں موت و حیات کی کشمکش میں مبتلاءمصری شہری کے متعلق ایک کویتی رکن پارلیمنٹ کا موقف بھی اسی طرح کی مثال ہے۔ کویتی وزارت سماجی امور کی جانب سے اس بدنصیبی غیر ملکی کو طبی امداد و رہائشی اخراجات دینے پر غور و فکر کیا جارہا تھا لیکن جیسے ہی رکن پارلیمنٹ صفا الہاشم کو اس بات کا پتہ چلا تو وہ سخت برہم ہوگئیں۔ گلف نیوز کے مطابق خاتون رکن پارلیمنٹ نے مطالبہ کیا کہ زخمی مصری شہری کو طبی و سماجی امداد ہرگز نہ دی جائے کیونکہ قانون اس کی اجازت نہیں دیتا۔

زیادہ پیسے کمانے پر متحدہ عرب امارات میں مقیم شہری کو دبئی کی جیل میں ڈال دیا گیا

صفا الہاشم نے اپنے موقف کا اظہار کرتے ہوئے کہا ”کس قانون، ضابطے یا فیصلے کے تحت یہ ممکن ہے کہ کسی غیر ملکی یا اس کے خاندان کی دیکھ بھال کی جائے؟ یہ امداد کس قسم کی ہوگی اور کہاں سے آئے گی، خصوصاً جبکہ ہمارے ہاں لیبر قوانین نافذ العمل ہیں۔ ہمیں معلوم ہے کہ اس غیر ملکی شہری کا سرکاری ہسپتال میں علاج کیا جارہا ہے، لیکن ہم پر لازم نہیں کہ اس کے خاندان کی دیکھ بھال بھی کریں۔“

یاد رہے کہ یہ رکن پارلیمنٹ اس سے پہلے بھی غیر ملکیوں کے متعلق انتہائی سخت آراءکا اظہار کرتی رہی ہیں۔ وہ کویت میں غیر ملکیوں کی تعداد کم کرنے کے لئے مسلسل متحرک رہی ہیں اور ان کا مطالبہ ہے کہ کویتی حکام بھی مصری شہریوں کے بارے میں وہی موقف اپنائیں جو مصری حکام کویتی شہریوں کے لئے اپناتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ مصر میں کویتی شہریوں کے ساتھ اچھا سلوک نہیں ہورہا تو کویتی حکومت کس بنیاد پر ایک مصری شہری اور اس کے خاندان کی دیکھ بھال کرنا چاہتی ہے۔

ڈیلی پاکستان کے یو ٹیوب چینل کو سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

مصری شہری وحید محمود رافع کو گزشتہ ہفتے ایک کویتی شہری نے وحشیانہ تشدد کا نشانہ بنایا تھا۔ وحید محمود کا جرم یہ تھا کہ اس نے موٹر سائیکل کا سپئیر پارٹ خریدنے کے لئے آنے والے کویتی شہری سے کہا تھا کہ وہ لنچ بریک کے بعد آ جائے۔ اس بات پر کویتی شہری ایسا مشتعل ہوا کہ مار مار کر بیچارے کی ہڈیاں توڑ ڈالیں۔ ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ وہ خوش قسمت ہے کہ زندہ بچ گیا ہے ورنہ جس طرح کا تشدد کیا گیا ہے اس کے نتیجے میں بچنے کی کوئی امید نہیں تھی۔

مزید : عرب دنیا