بھارت میں صدیوں پرانی روایات برقرار،عورتوں کو چپل پہننے کی اجازت نہیں

بھارت میں صدیوں پرانی روایات برقرار،عورتوں کو چپل پہننے کی اجازت نہیں

بھوپال(این این آئی)بھارت کی وسطی ریاست مدھیہ پردیش کے چمبل ڈویژن کے ایک گاؤں آمیٹھ میں خواتین مردوں کے سامنے چپل نہیں پہن سکتیں۔انھیں مردوں کے سامنے آنے یا ان کے سامنے سے گزرنے کے لیے چپل اتار کر ننگے پاؤں چلنا پڑتا ہے۔بھارتی ٹی وی کے مطابق تقریباً 1200 افراد پر مشتمل اس گاؤں میں خواتین کی آبادی تقریباً پانچ سو ہے۔ صبح سویرے آمیٹھ کی خواتین پانی کے لیے تقریباً ڈیڑھ کلو میٹر کا سفر کرتی ہیں جہاں ایک چشمے سے پانی حاصل ہوتا ہے۔گھر کے لوگوں کے لیے پانی کا انتظام کرنے میں انھیں روزانہ سات آٹھ گھنٹے لگتے ہیں۔ ایک ایسی ہی خاتون ششی بائی کا کہنا تھا کہ انھیں گھر اور سماج میں وہ عزت نہیں ملتی جس کی وہ مستحق ہیں۔

خواتین برسات کے مہینوں میں کیچڑ سے بھرے راستے یا جاڑے کے سرد راستے یا پھر گرمیوں کی تپتی راہوں پر بھی اس روایت کی پابندی کرتی ہیں۔

مزید : عالمی منظر