سندھ حکومت کا 1991سے قائم ہونیوالی صنعتیں دوبارہ رجسٹرڈ کرنے کا فیصلہ

سندھ حکومت کا 1991سے قائم ہونیوالی صنعتیں دوبارہ رجسٹرڈ کرنے کا فیصلہ

کراچی(این این آئی)سندھ کے صنعت وتجارت کے صوبائی وزیر منظور حسین وسان نے کہا ہے کہ سندھ حکومت نے 1991سے بننے والی انڈسٹریاں دوبارہ رجسٹرڈ کرنے کا فیصلہ کیا ہے,ایکٹ پاس ہونے کہ بعد صنعتکار انڈسٹریاں رجسٹر ڈ کرانے سے پہلے اپنے خرچے پر ٹریٹمینٹ پلانٹ لگانے کے پابند ہونگیں. یہ بات انہوں نے سندھ سیکریٹریٹ میں انڈسٹریز رجسٹریشن ایکٹ 2017 کے متعلق بلائے گئے صنعتکاروں سے اجلاس میں کہی. انہوں نے کہا کہ ایکٹ پاس ہونے کہ بعد نئی صنعتوں کی سروی بھی کی جاسکے گی, وزارت صنعت کے اجازت کے بغیر کوئی بھی صنعتکار نئی انڈسٹری نہیں لگائے گا,انڈسٹریز رجسٹریشن ایکٹ 2017 کابینہ میں جانے کہ بعد اسمبلی سے پاس ہوگا۔منظور حسین وسان نے کہا کہ انڈسٹریز رجسٹریشن ایکٹ 2017 پر سارے صنعتکار راضی ہوگئے ہیں,انڈسٹریز رجسٹریشن ایکٹ کے متعلق صنعتکاروں کو آگاہ کیا ہے۔اجلاس میں صنعتکاروں کو انڈسٹریز رجسٹر یشن ایکٹ 2017 کابینہ میں جانے سے پہلے صنعتکاروں سے مشاورت کی گئی۔کراچی کے صنعتی ایریازمیں پانچ ایفیلینٹ ٹریٹمنٹ پلانٹ بھی لگارہے ہیں۔ ایکٹ آنے والے کابینہ اجلاس میں پیش کیا جائیگا۔انہوں نے مزید کہا کہ نئی انڈ سٹری لگانے سے پہلے صنعتکار ایفیلینٹ ٹریٹمینٹ پلانٹ لگانے کہ پابند ہونگے۔صنعتوں سے نکلنے والا گندہ پانی ٹریٹ ہونے کہ بعد زمینوں پر استعمال کیا جاسکتا ہے.اجلاس میں شریک صنعتکا روں نے کہا کہ ہمیں کوئی اعترض نہیں ہے سندھ بھر کی انڈسٹریوں کو رجسٹرڈ کیا جائے,نوے فیصد صنعتین تباہ ہوری ہیں, وفاقی حکومت سپورٹ کرے. اس موقعی پر اجلاس میں وزیر محنت سید ناصر حسین شاہ,وزیر انوائر نمینٹ محمد علی ملکانی, سیکریٹری صنعت عبداالرحیم سومرو,صنعتکار جمشید موتیوالا.مسرور علوی,بابرخان اورڈاکٹر قیصروحید شریک ہوئے ۔

مزید : کامرس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...